.

عراق : داعش کی خود کش بم باروں کے ساتھ رمادی میں دراندازی ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں سکیورٹی فورسز نے داعش تنظیم کے ساتھ شدید جھڑپوں کے بعد رمادی شہر کے جنوبی اور مغربی حصوں میں واقع تین علاقوں کا کنٹرول واپس لے لیا ہے۔ انبار صوبے کے پولیس سربراہ کے مطابق داعش نے آج صبح سویرے مذکورہ علاقوں میں دراندازی کی کوشش کی تھی۔

بریگیڈیئر جنرل ہادی رزیج کسار کے اعلان کے مطابق سکیورٹی فورسز اور مقامی قبائل نے جنوب میں الطاش اور المجر جب کہ مغرب میں 7 کلومیٹر دور ایک علاقہ وپس لے لیا اور دراندازی کرنے والے داعش کے تمام جنگجوؤں کو ہلاک کر ڈالا۔

اس سے قبل بدھ کی صبح رمادی کے قریب تین علاقوں میں عراقی فورسز اور داعش کے درمیان شدید جھڑپیں پھوٹ پڑیں۔ عراقی فوج کے ایک کرنل ولید الدلیمی کے مطابق دراندازی کرنے والے داعشی عناصر کے پاس بھاری اسلحہ اور ساز و سامان تھا اور ان میں خود کش بم بار بھی موجود تھے۔

ادھر رمادی جنرل ہسپتال میں طبی ذریعے نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا ہے کہ جھڑپوں کے بعد ہسپتال میں دو سکیورٹی اہل کاروں کی لاشوں اور 18 زخمی افراد کو لایا گیا جن میں ایک خاتون بھی ہے۔

یاد رہے کہ عراقی افواج نے گزشتہ ہفتے فوجی آپریشن کا آغاز کیا تھا جس کے نتیجے میں انبار صوبے کے مغرب میں داعش کے زیر قبضہ بعض علاقوں کا کنٹرول واپس حاصل کر لیا گیا۔

اس سے قبل نو فروری 2016 کو عراقی افواج نے انبار صوبے کے صدر مقام رمادی شہر کو واپس لے لیا تھا جب کہ اسی صوبے کے ایک اہم شہر فلوجہ کا کںٹرول چھبیس جون کو ہاتھ میں آیا۔