غیرمعمولی موٹاپے سے فوت ہونےوالی مصری خاتون کا سفر آخرت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کی نصف ٹن وزنی خاتون جو موٹاپے کی بیماری کے باعث دو روز قبل متحدہ عرب امارات کے شہر ابو ظہبی کے برجیل اسپتال میں انتقال کرگئی تھی کا جسد خاکی اس کے آبائی شہراسکندریہ پہنچا دیا گیا ہے جہاں کل منگل کو اسے سپرد خاک کردیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مرحومہ ایمان عبدالعاطی کا جسد خاکی منگل کے روز امارات کی فضائی کمپنی ’الاتحاد ایئرلائن‘ کے ایک خصوصی طیارے کی مدد سے قاہرہ لایا گیا جہاں ایمان کے اہل خانہ اور دیگر اقارب نے اس کا جسد خاکی وصول کیا۔

بعد ازاں میت ایک گاڑی پر رکھ کر اسکندریہ پہنچائی گئی۔ اسکندریہ میں شاہراہ امام المسجد پر بڑی تعداد میں لوگ جمع تھے، جہاں میت کو گاڑی سے اتارے بغیر ہی اس کی نماز جنازہ ادا کی گئی۔ اس دوران اس کی قبر تیار کرلی گئی تھی۔ نماز جنازہ کی ادائی کے فوری بعد اسے سپرد خاک کردیا گیا۔

قبل ازیں متوفیہ کی ہمشیرہ جو اپنی مریض بہن کے علاج کے صبر آزما سفر میں اس کے ساتھ رہیں نے ’فیس بک‘ پر ایمان کے جنازے اور تدفین کے اوقات کا اعلان کیا تھا۔

انہوں نے فیس بک پرپوسٹ ایک بیان میں لکھا کہ ایمان عبدالعاطی کی نماز جنازہ اسکندریہ شہر میں اللبان کے مقام پر مسجد العمری کے گراؤنڈ میں منگل کو نماز ظہر کے بعد ادا کی جائے گی۔ انہوں نے تعزیت کرنے والوں کا شکریہ ادا کیا۔

خیال رہے کہ غیرمعمولی موٹاپے کے باعث نصف ٹن وزنی مصری خاتون ایمان عبدالعاطی کو کچھ عرصہ قبل بھارتی ڈاکٹروں کے اصرار پر ممبئی کے ایک اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔ ممبئی لانے کےبعد ایمان کی حالت مزید خراب ہوگئی تھی۔ اس کے اہل خانہ نےبھارتی ڈاکٹروں پر علاج میں غفلت کا الزام عاید کیا اور کہا کہ ڈاکٹر ایمان کے علاج کی آڑ میں شہرت حاصل کرنا چاہتے تھے۔ ممبئی میں علاج نہ ہونے کے بعد اسے متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت ابو ظہبی کے برجیل اسپتال میں داخل کیا گیا۔ برجیل اسپتال میں اس کا علاج کامیابی کے ساتھ جاری تھا اور اس کی تیزی کے ساتھ روبہ صحت ہونے کی خبریں آرہی تھیں تاہم چند روز قبل اس کی حالت اچانک بگڑ گئی جس کے بعد وہ جاں بر نہ ہوسکیں اور انتقال کرگئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں