کردستان ہوائی اڈوں کا کنٹرول تین دن میں ہمارے حوالے کر دے:العبادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق کے وزیر اعظم حیدر العبادی نے علاحدگی کے لیے جدوجہد کرنے والے کرد صوبے کردستان کی قیادت کو تمام ہوائی اڈوں اور بین الاقوامی گذرگاہوں کا کنٹرول تین دن کے اندر اندر مرکز کے حوالے کرنے کی مہلت دی ہے اور کہا ہے کہ اگر ہوائی اڈوں کا کنٹرول بغداد کے حوالے نہ کیا گیا تو کردستان پر عالمی فضائی پابندیاں عاید کی جا سکتی ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق عراقی وزیر اعظم نے بغداد میں ہفتہ وار پریس کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ وفاقی کابینہ نے کردستان پر عالمی فضائی پابندیوں کا فیصلہ کیا ہے۔ کردستان حکومت کے پاس صرف تین دن کی مہلت ہے۔ اگر اربیل نے اس مہلت کے اندر اندر ہوائی اڈوں اور گذرگاہوں کا کنٹرول مرکز کو سپرد نہ کیا تو اس پر فضائی پابندیاں عاید کر دی جائیں گی۔

العبادی نے کہا کہ خطے کے تمام ممالک بغداد کے ساتھ کھڑے ہیں اور کردستان صوبے میں ہونے والے ریفرینڈم کی حمایت کرنے کے لیے کوئی بھی تیار نہیں۔ کرد قیادت نے ہمارے کسی مشورے پرعمل درآمد نہیں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ کردستان کے علاحدگی کے لیے ہونے والے ریفرینڈم نے خطے کے ممالک کے مفادات کو خطرے میں ڈال دیا ہے۔ کرد قیادت نے علاحدہ ریاست کے لیے ریفرینڈم کرا کے بہت بڑی تاریخی اور تزویراتی غلطی کا ارتکاب کیا ہے۔ عراق آج بھی متحد ہے اور آئندہ بھی کسی جبر کے بغیر متحدہ رہے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ کردستان میں عوامی ریفرینڈم غیر آئینی ہے اور اس کے نتائج پر کوئی مذاکرات نہیں کریں گے۔ بعض لوگ ہمیں کردستان کے خلاف طاقت کے استعمال کا مشورہ دیتے ہیں مگر ہم ایسا نہیں کریں گے۔ تاہم کردستان پر پابندیاں عاید کی جا سکتی ہیں۔ بغداد کردستان سے تیل خریدنے والوں کا تعاقب کرے گا۔

خیال رہے کہ حال ہی میں بغداد حکومت نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ کردستان کے لیے اپنی براہ راست پروازیں بند کر دیں۔ بغداد کا مطالبہ ہے کہ دوسرے ممالک کردستان کے دو بین الاقوامی ہوائی اڈوں سلیمانیہ اور اربیل کو استعمال نہ کریں۔ بغداد کی درخواست پر ایران نے کردستان کے لیے اپنی فضائی سروس معطل کر دی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں