.

عراق :کردستان میں پھنسے غیرملکیوں کو بغداد کے ذریعے واپس جانے کی اجازت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق نے بین الاقوامی پروازوں پر پابندی کے بعد کردستان میں پھنس جانے والے غیرملکیوں کو بغداد کے ذریعے اپنے ممالک کو واپس جانے کی اجازت دے دی ہے۔

قبل ازیں خود مختار شمالی کردستان کے علاقائی ویزے پر آنے والے غیرملکی عراق کے دوسرے علاقوں میں داخل نہیں ہو سکتے تھے اور انھیں عراق سے الگ سے ویزا لینا پڑتا تھا لیکن اب عراقی کردستان میں مقیم ایسے غیرملکیوں کے لیے بغداد حکومت نے عارضی طور پر یہ شرط ختم کردی ہے اور وہ عراق کے ویزے یا کوئی اضافہ رقم یا جرمانہ ادا کیے بغیر بغداد آسکتے ہیں اور وہاں سے بین الاقوامی پروازوں کے ذریعے اپنے اپنے ممالک کو روانہ ہوسکتے ہیں۔

عراق کے وزیر داخلہ قاسم العراجی نے سوموار کے روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’ کوئی بھی شخص بغداد کے ذریعے جرمانہ ادا کیے یا اخراجی ویزے کے بغیر ملک سے واپس جا سکتا ہے‘‘۔

عراق نے جمعہ کو کردستان کے بین الاقوامی ہوائی اڈوں پر تمام بین الاقوامی پروازوں کی آمد ورفت پر پابندی لگا دی تھی۔اس نے یہ فیصلہ عراقی کردستان میں گذشتہ سوموار کو منعقدہ آزادی ریفرینڈم کے ردعمل میں کیا تھا۔

اس ریفرینڈم میں قریباً 93 فی صد کرد ووٹروں نے آزادی کے حق میں ووٹ دیا تھا لیکن اس ریفرینڈم کے بعد خطے میں کشیدگی پیدا ہوچکی ہے اور اس کے نتائج کو بغداد حکومت اور عراق کے پڑوسی ممالک ترکی اور ایران نے تسلیم نہیں کیا ہے اور وہ کردستان کے خلاف سخت اقدامات کی بھی دھمکیاں دے رہے ہیں۔