.

میڈیا پر پانی کی طرح پیسہ بہانے کے باوجود قطر کچھ نہیں بگاڑ سکا

تنازع کے سیاسی حل کا موقع دوحہ کے ہاتھ سےنکل رہا ہے: قرقاش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور انور قرقاش نے ایک بیان میں کہا ہے کہ بحران کے حل کے لیے قطر کے ہاتھ سے آپشن تیزی کے ساتھ نکل رہے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ قطری حکومت نے اپنی مظلومیت ثابت کرنے کے لیے ذرائع ابلاغ کے ذریعے بے دریغ پیسہ استعمال کیا ہے مگر دوحہ کو اس کا کوئی فایدہ نہیں ہوسکا اور نہ ہی قطر دوسرے ممالک کا کچھ بگاڑ سکا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اپنی متعدد ’ٹویٹس‘ میں وزیر مملکت انور قرقاش نے کہا کہ قطری بحران کے حوالے سے سعودی عرب، امارات، بحرین اور مصر اپنے موقف پر مضبوطی کے ساتھ قائم ہیں اور یہ کیس ان کی اولین ترجیح نہیں رہا ہے۔ قطر کو بہ خوبی اندازہ ہے کہ بحران سے نکلنے کا کیا راستہ ہوسکتا ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ قطر نے دنیا میں اپنی مظلومیت ثابت کرنے کے لیے میڈیا پر بے دریغ پیسہ خرچ کیا مگر وہ نیویارک میں جنرل اسمبلی کے اجلاس میں عالمی برادری کی ہمدردیاں حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکا۔ انور قرقاش کا کہنا ہے کہ بحران کے حل کے لیے مضبوط سیاسی ویژن اور دانش مندی کی ضرورت ہے میڈیا پر پانی کی طرح پیسہ بہانے سے یہ مسئلہ حل نہیں ہوگا۔