.

صالح کے حامی آئینی حکومت کو سپورٹ کریں : یمنی نائب وزیراعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے نائب وزیراعظم عبدالعزیز جباری کا کہنا ہے کہ وقت آ گیا ہے کہ تعز کو حوثی اور معزول صالح کی باغی ملیشیاؤں کے عناصر سے پاک کرنے کا عمل مکمل کر لیا جائے۔ جباری ان دنوں ایک اعلی حکومتی وفد کی صدارت کرتے ہوئے کئی روز سے محصور شہر تعز کے دورے پر ہیں۔

منگل کو یمن کے نائب وزیراعظم نے اس بات پر زور دیا کہ شہر میں امن و استحکام کو مضبوط کرنے اور زندگی معمول پر لانے کی کوششوں کو بڑھانے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے تعز میں معزول صالح کی جماعت کے باقی عناصر کو جو حوثی ملیشیا کے اتحادی ہیں مخاطب کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ وہ آئینی حکومت کی صف میں شامل ہو جائیں۔

جباری نے مذکورہ عناصر پر یہ بھی زور دیا کہ وہ ضرر رساں قیادت سے نجات حاصل کریں جو پارٹی کے بنیادی نصب العین سے دست بردار ہو کر ریاستی اداروں کے خلاف بدبختی پر مبنی بغاوت سے جا ملی۔ جباری کا اشارہ معزول صدر علی عبداللہ صالح کی جانب تھا جو 35 برس قبل پارٹی کی تاسیس کے وقت سے اس کے سربراہ ہیں۔

ادھر یمنی صدر عبدربہ منصور ہادی نے نائب وزیر اعظم کی قیادت میں تعز کا دورہ کرنے والے حکومتی وفد کے ساتھ ٹیلیفون پر رابطہ کیا۔ ہادی نے ہدایت کی کہ تعز صوبے کی صورت حال معمول پر لانے اور اس کی آزادی کو مکمل کرنے کے لیے تمام تر اقدام کیے جائیں۔ یمن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق صدر ہادی کا کہنا تھا کہ وہ باغیوں کے خلاف عسکری کامیابیوں کے حوالے سے پیش رفت کے بارے میں مستقل طور پر با خبر ہیں۔