.

حوثیوں نے معزول صالح کی ہمنوا قیادت کی خُفیہ ہِٹ لِسٹ تیار کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمنی ویب سائٹوں پر یہ خبر گردش کر رہی ہے کہ حوثیوں نے دارالحکومت صنعاء اور اپنے زیر قبضہ دیگر صوبوں میں معزول صدر علی عبداللہ صالح کی ہمنوا عسکری قیادت کے ناموں کی خفیہ ہِٹ لسٹ تیار کر لی ہے۔

مذکورہ ویب سائٹوں کے مطابق اس فہرست میں جس کی ابھی تک تصدیق نہیں ہو سکی ہے صفِ اوّل اور دوم کی عسکری قیادت کے نام شامل ہیں جس کا مقصد معزول صالح کے دھڑے کو کاٹ دینا اور بغاوت کے تین سال گزر جانے کے بعد معزول صدر کے رسوخ کا خاتمہ کرنا ہے۔

یہ ہٹ لسٹ صرف صنعاء میں صالح کی فورسز کی قیادت تک محدود نہیں بلکہ اس میں حوثیوں کے زیر قبضہ تمام صوبوں میں مختلف عسکری یونٹوں اور حلقوں سے تعلق رکھنے والے رہ نما شامل ہیں۔

ویب سائٹوں کے مطابق قیادت کے خاتمے کا مشن حوثی کمانڈر ابو علی الحاکم کو سونپا گیا ہے جسے کچھ عرصہ قبل باغیوں کی حکومت میں انٹیلی جنس اتھارٹی کا سربراہ مقرر کیا گیا تھا۔ اس نے حالیہ عرصے میں صالح کی ہمنوا فوجی قیادت سمیت متعدد لوگوں کو ہلاک کرنے اور ان کو اغوا کرنے کی کارروائیوں کی ذمے داری بھی سنبھالی ہوئی تھی۔

اس مہم کے دوران باغیوں کی وزارت دفاع میں افسران کے حلقے کے سربراہ بریگیڈیئر جنرل قائد العنسی کی گرفتاری بھی عمل میں آئی۔ العنسی نے 13 ہزار مسلح حوثیوں کو ترقی دینے کے احکامات پر دستخط کرنے سے انکار کر دیا تھا۔