.

حوثیوں کے سرغنے کو نشانہ بنانے کے لیے یمنی فوجی آپریشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمنی فوج کے ایک عسکری کمانڈر نے انکشاف کیا ہے کہ ملک کے انتہائی شمال میں واقع صوبے صعدہ کے وسط میں ایک وسیع فوجی آپریشن کیا جا رہا ہے جس کا مقصد "سانپ کا سر کچلنا" ہے۔ کمانڈر کا اشارہ حوثیوں کے سرغنے عبدالملک الحوثی اور مران کے پہاڑوں میں واقع غاروں میں اس کے مرکزی گڑھ کی جانب تھا۔

یمنی فوج کے بریگیڈیئر جنرل ہیکل حنتف کے مطابق اس آپریشن کا مقصد حوثی ملیشیا کے مرکزی گڑھ یعنی مران کے پہاڑوں تک پہنچنا اور صعدہ صوبے کو ان خونی ٹولیوں سے پاک کرنا ہے جنہوں نے ملک کو تباہی کے ایسے مقام پر لا کھڑا کیا ہے جس کی مثال یمن کی تاریخ میں نہیں ملتی۔

بریگیڈیئر جنرل حنتف نے الجوف صوبے میں جاری عسکری کارروائیوں کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی۔ انہوں نے واضح کیا کہ الجوف میں آپریشن کی تکمیل کے نتیجے میں یہاں کے محاذوں کو صعدہ کے محور سے متصل کرنا آسان ہو جائے گا اور اس طرح باغیوں کے گڑھ تک پہنچنے اور سانپ کا سر کچلنے کی راہ ہموار ہو جائے گی۔

یمنی فوج کے فرسٹ بریگیڈ نے گزشتہ ماہ کے اواخر میں الجوف میں واقع الغریمیل عسکری کیمپ اور دیگر متعدد علاقوں کا کنٹرول حاصل کر لیا تھا۔ یمن کی سرکاری فوج نے سعودی عرب کے زیر قیادت عرب عسکری اتحاد کی معاونت سے صعدہ میں باغیوں کے گڑھ کے گرد گھیرے کو مضبوط بنا لیا۔ اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ یہاں پر حتمی اور فیصلہ کن معرکے کا وقت قریب آ رہا ہے۔