.

رِقّہ وفاقی شام کا ایک حصّہ ہوگا: ایس ڈی ایف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں سیریئن ڈیموکریٹک فورسز SDF کے ترجمان طلال سلو کا کہنا ہے کہ رقّہ شہر کی انتظامیہ شہر کی سکیورٹی کونسل کے حوالے کر دی جائے گی۔ رقّہ شہر کے آزاد کرائے جانے کے سرکاری اعلان کے دوران انہوں نے اس کامیابی کو "تاریخی فتح" قرار دیا۔

ترجمان نے اپنے خطاب میں کہا کہ رقّہ صوبہ اپنے تمام شہروں اور دیہی علاقوں سمیت "وفاقی لا مرکزیت" کا حصّہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ "ہم تمام بیرونی خطرات کے خلاف صوبے کی حدود کے تحفظ کا عہد کرتے ہیں اور یہ باور کراتے ہیں کہ رقّہ صوبے کا مستقبل اس کے رہنے والے متعین کریں گے اور وہ خود اپنے انتظامی امور کو سنبھالیں گے"۔

طلال سلو نے تمام تنظیموں کو رقہ کی تعمیر نو میں شریک ہونے کی دعوت دی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ شہر کو بارودی سرنگوں سے مکمل طور پر پاک کر لینے کے بعد فوری طور پر نقل مکانی کرنے والوں کے لیے واپسی کا دروازہ کھول دیا جائے گا تا کہ وہ اپنے گھروں کو لوٹ سکیں۔

یاد رہے کہ ایس ڈی ایف اور داعش کے درمیان معرکے کے آخری مرحلے کے ساتھ ہی گزشتہ ہفتے کے دوران تقریبا 3500 افراد رقہ سے کوچ کر گئے تھے۔ شام میں انسانی حقوق کے نگرانی کے سب سے بڑے گروپ المرصد کے مطابق رقہ کے حالیہ معرکے کے دوران 1172 شامی شہری جاں بحق ہوئے۔

اس سے قبل طلال سلو نے بدھ کے روز کہا تھا کہ ایس ڈی ایف اپنے جنگجوؤں کی از سر نو تعیناتی عمل میں لائے گی تا کہ وہ رقّہ سے ملک کے مشرقی صوبے دیر الزور میں داعش کے خلاف لڑائی کے محاذوں پر منتقل ہو جائیں۔