.

وادی گولان میں گولہ گرنے کے بعد اسرائیل کی شام میں بمباری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ جمعرات کو وادی گولان کے اسرائیل کے زیرتسلط علاقے میں گولہ گرنے کے بعد شام میں صدر بشارالاسد کے زیرانتظام علاقوں پر بمباری کی گئی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اسرائیلی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ وادی گولان میں گولہ گرنے سے کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا تاہم اس واقعے کے بعد توپ خانے سے شام کے اندر شامی فوج کی تنصیبات کو نشانہ بنایا گیا۔

خیال رہے کہ شام میں جاری خانہ جنگی کے دوران وادی گولان میں ہاون راکٹ گرنے کے واقعات اکثر پیش آتے رہتے ہیں۔

سنہ 2011ء کے بعد سے اسرائیل تواتر کے ساتھ شام کے اندر اسدی فوج اور اس کی حلیف لبنانی حزب اللہ کے ٹھکانوں پر فضائی اور زمینی حملے کرتا رہا ہے۔

اسرائیل نے جون 1967ء کی چھ روزہ جنگ کے دوران شام کے وادی گولان کے 1200 مربع کلو میٹر کے علاقے پر قبضہ کرلیا تھا۔ شام کے پاس وادی گولان کا صرف 510 کلو میٹر رقبہ بچا ہے۔