.

شام:پاسداران انقلاب اوردیگرایرانی ملیشیاؤں کے 11 جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق شام کے محاذ جنگ پر اسد رجیم کے دفاع میں لڑتے ہوئے پاسداران انقلاب کے 4 اور دیگر ایرانی ملیشیاؤں کے 7 جنگجوؤں سمیت 11 عناصر ہلاک ہوگئے ہیں۔

خبر رساں ایجنسی ’مہر‘ کی رپورٹ کے مطابق حالیہ چند ایام میں شام میں پاسداران انقلاب کے چار اہلکار مارے گئے جب کہ افغان جنگجوؤں کی ’فاطمیون‘ اور پاکستانیوں کی‘زینبیون‘ سے وابستہ 7 جنگجو مارے گئے۔

رپورٹ کے مطابق ایرانی فوج کا ایک ریٹائرڈ فوجی افسر مصطفیٰ نبی لو جو چوتھی بار پاسداران انقلاب کی صفوں میں شامل ہو کر شام میں لڑ رہا تھا مغربی شام کی اللاذقیہ گورنری میں ہلاک ہوگیا۔

پاسدارن انقلاب کی بسیج ملیشیا سے وابستہ حبیب ریاضی بور اتوار کے روز دیر الزور میں لڑائی کے دوران مارا گیا۔

خبر رساں ایجنسی ’IRIB‘ کے مطابق شام میں حالیہ ایام میں مارے جانےوالے ایرانی فوجیوں میں پاسداران انقلاب کے 40 ویں انجینیرنگ کور سے حسین آقا دادی، مذہبی لیڈر احمد قنبری جمعہ کو ہلاک ہوئے تاہم ان کی جائے قتل کی نشاندہی نہیں کی گئی۔

دیگر جنگجوؤں میں افغان ملیشیا کے صمد جمشیدی، علی صالحی، علی نجیب محمدی، یاسین نظری، محمد بلخی اور نوروز امامی جب کہ پاکستانی ملیشیا’زینبیون‘ کے عباس میر زینبی کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے۔ ان تمام مقتولین کی لاشیں ایران لائی گئیں جہاں وسطی ایران کے قم شہر میں انہیں فوجی اعزاز کے ساتھ دفن کیا گیا۔

خیال رہے کہ شام میں ایرانی فوجیوں اور ایرانی ملیشیا کے سنہ 2013ء کے بعد ہلاک ہونے والے عناصر کی تعداد 3500 تک پہنچ گئی ہے۔