.

یمنی فوج کی کارروائی، تعز سے 8 رکنی دہشت گردی سیل گرفتار

گرفتار دہشت گردوں میں خطرناک اشتہاری بھی شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی فوج نے ملک کے جنوب مغربی شہر تعز میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کے دوران انتہائی خطرناک دہشت گرد اور اشہتاری سمیت 8 رکنی ایک دہشت گرد سیل کو گرفتار کرلیا ہے۔

یمنی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان کی نقل ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو ملی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ فوج کے بریگیڈ 22 نے تعز میں میکا کے مقام پر ایک کارروائی کے دوران دہشت گرد سیل کےسرغنہ اور سیکیورٹی اداروں کو مطلوب ھاشم الصنعانی سمیت آٹھ دہشت گردوں کو گرفتار کیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ دہشت گردوں کو کئی روز کی مانیٹرینگ اور ان کی ریکی کے بعد گرفتار کیا گیا ہے۔

بریگیڈ 22 کے اہلکاروں نے سوموار کو وسطی تعز میں عصیفرہ کے مقام پر چھاپہ مارا جہاں سے مفرو ھاشم الصنعانی کو اور اس کے کئی دوسرے ساتھیوں کو گرفتار کرلیا گیا۔

سیکیورٹی فورسز نے حالیہ ہفتوں کے دوران تعز میں دہشت گردوں کے مشتبہ ٹھکانوں پر چھاپوں کے لیے الجمہوری کالونی، الصمیل بازار اور دیگر مقامات پر بھی چھاپے مارے اور کئی دہشت گردوں کو گرفتار کیا ہے۔

مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ ہاشم الصنعانی تعز میں داعش کا امیر ہے اور وہ سیکیورٹی اداروں پر کئی خون ریز حملوں میں ملوث رہا ہے۔ اسے سیکیورٹی ادارے کئی ماہ سے پکڑنے کی کوشش کررہے تھے۔