.

حوثیوں کا اقوام متحدہ کے ایلچی پر جانب دارانہ مواقف اپنانے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی باغی حوثی جماعت نے اقوام متحدہ اور یمن کے لیے اس کے خصوصی ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمد کو شدید نکتہ چینی کا نشانہ بنایا ہے۔

حوثیوں کے ترجمان محمد عبدالسلام نے کہا ہے کہ ولد الشیخ احمد جارحیت پر مبنی مواقف اپنا کر انہیں مسلط کرنے کے لیے کوشاں ہیں۔ ترجمان نے اقوام متحدہ پر الزام عائد کیا کہ وہ صنعاء کا ہوائی اڈہ کھولنے اور انسانی اور اقتصادی محاصرہ ختم کرانے میں ناکام رہی ہے۔

اخباری بیان میں عبدالسلام نے کہا کہ درحقیقت امریکی مواقف نے ماضی میں امن عمل کی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کیں اور بحران کے حل کے حوالے سے تجاویز کا راستہ روکا۔

ولد الشیخ نے ریاض میں اس منصوبے کے بنیادی نکات کو پیش کیا جس پر وہ یمن کا بحران حل کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں۔ ان نکات میں درج ذیل امور شامل ہیں :
* عسکری کارروائیاں روکنے کے معاہدے پر دوبارہ عمل درامد
* فریقین کے درمیان اعتماد قائم کرنے کے لیے تدابیر لاگو کرنا تا کہ انسانی دکھوں میں کمی آئے
* ایک جامع امن معاہدے تک پہنچنے کے مقصد اور مذاکرات کی میز پر واپس آنا