.

مصر کے ساتھ سرحد پر رفح کی گزرگاہ فلسطینی اتھارٹی کے حوالے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی تنظیم حماس نے بدھ کے روز مصر کے ساتھ "رفح" کی سرحدی گزرگاہ کو فلسطینی اتھارٹی کے حوالے کر دیا۔

فلسطینی اتھارٹی اور حماس کے ذمے داران نے اس معاہدے پر دستخط کیے جس کے تحت گزر گاہ کا انتظام منتقل کیا گیا۔

برطانوی خبر رساں ایجنسی نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا ہے کہ حماس تنظیم نے اسرائیل اور مصر کے ساتھ غزہ پٹی کی سرحدی گزرگاہوں کا کنٹرول فلسطینی اتھارٹی کے حوالے کرنا شروع کر دیا ہے۔ یہ اقدام قاہرہ کے توسط سے طے پائے جانے والے اس معاہدے کے تحت عمل میں لایا جا رہا ہے جس نے حماس اور فتح کے درمیان دس سے جاری بحران کو ختم کر دیا۔

فلسطینی اتھارٹی کے ملازمین اسرائیل کے ساتھ سرحد پر دو گزرگاہوں اریز اور کرم ابو سالم اور مصر کی سرحد پر رفح کی گزرگاہ میں داخل ہو گئے جب کہ حماس کے تمام ملازمین اپنا سامان سمیٹ کر ٹرکوں میں کوچ کر گئے۔

اس موقع پر رفح کی گزرگاہ پر مصری جانب فلسطینی اور مصری پرچموں کے علاوہ فلسطینی صدر محمود عباس اور مصری صدر عبدالفتاح السیسی کی تصاویر بھی بلند کی گئیں۔

فلسطینی شہری امور کی اتھارٹی کے سربراہ حسین الشیخ کا کہنا ہے کہ مصری حکام کے ساتھ رابطہ کاری سے آئندہ ماہ کے وسط تک رفح کی گزرگاہ پر معمول کے مطابق کام دوبارہ شروع ہونے کا اعلان کیا جائے گا۔

دریں اثنا فلسطینی اتھارٹی کے لیے مصری سفیر سامی مراد کی سربراہی میں مصر کا ایک سکیورٹی وفد گزرگاہوں کے فلسطینی حکومت کے حوالے کیے جانے کی کارروائی کی نگرانی کے لیے پہنچ گیا۔