.

سعودی عرب: انسدادِ بدعنوانی کمیٹی سرمایہ کاری کا حوصلہ افزا ماحول قائم رکھے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے اعلان کیا ہے کہ انسداد بدعنوانی کی کمیٹی معیشت کو مضبوط بنائے گی اور مملکت میں منصفانہ حوصلہ افزا ماحول میں سرمایہ کاری کو متحرک رکھے گی۔

اس سے قبل خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ہفتے کے روز ایک شاہی فرمان کے ذریعے ولی عہد کی سربراہی میں انسداد بدعنوانی کی ایک سپریم کمیٹی تشکیل دینے کا اعلان کیا۔

انسداد بدعنوانی کمیٹی میں مانیٹرنگ وانویسٹی گیشن اتھارٹی کے چیئرمین، قومی انسداد کرپشن اتھارٹی کے چیئرمین اور جنرل آڈٹ بیورو کے چیئرمین، اٹارنی جنرل اور اسٹیٹ سیکیورٹی کے سربراہ بطور ارکان شامل ہوں گے۔ کمیٹی کے قیام کا مقصد ملک میں کرپشن کا خاتمہ اور بدعنوانی میں ملوث حکومتی عمال، وزراء، شہزادوں اور سرکردہ شخصیات کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لانا ہے۔

سعودی وزارت اطلاعات کے مطابق بدعنوانی میں حاصل کی گئی تمام رقم کو ریاست کے خزانے میں جمع کرایا جائے گا۔

ادھر سعودی اٹارنی جنرل شیخ سعود المعجب نے واضح کیا ہے کہ بدعنوانی کے الزام میں حراست میں لیے جانے والے تمام افراد کے ساتھ ان کے منصبوں اور پوزیشنوں کی وجہ سے کوئی خاص معاملہ نہیں کیا جائے گا۔ تاہم یہ تمام لوگ ان تمام حقوق اور برتاؤ کے مستحق ہوں گے جو کسی بھی دوسرے سعودی شہری کو حاصل ہیں۔