.

الحشد الشعبی میں بڑے پیمانے پر کرپشن کا انکشاف

جعلی ناموں کے تحت تنخواہیں بٹورنے کا حربہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کےوزیراعظم حیدر العبادی نے اعتراف کیا ہے کہ ملک میں قائم شیعہ ملیشیا الحشد الشعبی میں وسیع پیمانے پر کرپشن سامنے آئی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ الحشد الشعبی کے بعض رہ نما تنخواہوں کے مسئلے کو قبل از وقت انتخابی پروپیگنڈے کے طور پراستعمال کررہے ہیں۔

الحدث چینل کی رپورٹ کے مطابق حیدر العبادی کا کہنا ہے کہ الحشد الشعبی کی قیادت ملیشیا کے عناصر کے ساتھ بہاؤ تاؤ کرتے ہیں۔ فرضی اور جعلی ناموں کی رجسٹریشن کے لیے تنخواہوں کا بھی کا مطالبہ کرتے ہیں تاکہ تنخواہوں کی آڑ میں رقوم غبن کی جاسکیں۔

حیدر العبادی کی طرف سے سامنے آنے والے الزامات کے باوجود بہ ظاہر لگتا ہے کہ وہ الحشد الشعبی کو پیش آئند انتخابات میں شامل ہونےسے روکنے کے حق میں نہیں حالانکہ آئین الحشد الشعبی ملیشیا کو انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت نہیں دیتا۔

یہی بات ’یونائیٹڈ کولیشن‘ کے چیئرمین اسامہ النجیفی بھی کہہ چکے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ عراقی حکومت الحشد الشعبی کو انتخابات میں حصہ لینے اور اپنے امیدوار کھڑے کرنے سے نہیں روک سکتی۔

خیال رہے کہ عراقی دستور کے تحت مسلح افواج یا الحشد الشعبی اور ان سے منسوب کوئی بھی شخص اپنے عہدے سے استعفیٰ دیے بغیر انتخابات میں حصہ نہیں لے سکتا۔