.

شامی فوج کے محاصرے کا شکار مشرقی الغوطہ مکمل تباہی کے دہانے پر ہے: اقوام متحدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے انسانی امور کے مشیر جان ایگلینڈ نے کہا ہے کہ شامی فوج کے محاصرے کا شکار مشرقی الغوطہ میں قریباً چار لاکھ شہری انسانی المیے سے دوچار ہونے کے قریب ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ باغیوں کے زیر قبضہ اس علاقے میں امدادی سامان کی فراہمی رک چکی ہے اور سیکڑوں افراد کو فوری طبی امداد کے لیے دوسرے علاقوں میں منتقل کرنے کی ضرورت ہے۔

انھوں نے جمعرات کے روز جنیوا میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مشرقی الغوطہ کی ناکا بندی کی وجہ سے پہلے ہی سات افراد مارے جا چکے ہیں کیونکہ انھیں علاج کے لیے کہیں اور منتقل نہیں کیا جاسکا تھا۔اس وقت اٹھارہ بچوں سمیت انتیس افراد کی حالت تشویش ناک ہے اور ان کی جانوں کو خطرہ ہے۔

انھوں نے شام کے بارے میں اقوام متحدہ کی ٹاسک فورس کے اجلاس کے بعد صحافیوں کو شامی دارالحکومت دمشق کے نواح میں واقع علاقے مشرقی الغوطہ کی تازہ صورت حال سے آگاہ کیا ہے۔