.

سعودی عرب پر ایران کے میزائل حملے خطرناک جارحیت ہے: امارات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات نے ایک بار پھر ایران کی طرف سے سعودی عرب پر میزائل حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ ایرانی میزائل حملے تہران کی خطرناک جارحیت ہے۔

العربیہ کے مطابق متحدہ عرب امارات کےوزیر برائے خارجہ امور ڈاکٹر انور قرقاش نے ابوظہبی میں ہونے والی چوتھی تزویراتی کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ ایران سعودی عرب میں اپنی مجرمانہ جارحیت کے لیے یمن کے حوثی باغیوں کو استعمال کررہا ہے۔

سعودی عرب کے دارالحکومت الریاض پر داغا جانے والا ایرانی بیلسٹک میزائل یمن سے حوثیوں نے چھوڑا تھا۔

انہوں نے کہا کہ ایران کی بڑھتی جارحیت کے سامنے عرب دنیا خاموش تماشائی نہیں رہے گی۔ یمن میں آئینی اور دستوری حکومت کی رٹ قائم کرنا عرب اتحاد کی ذمہ داری ہے اور ہم سعودی عرب کی قیادت میں یہ مشن اپنی منطقی انجام تک جاری رکھیں گے۔

انور قرقاش کا کہنا تھا کہ یمن میں حوثیوں کی شکل میں ایک نئی حزب اللہ کا ظہور نہیں ہونے دیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ عرب ممالک کے پاس ایران کی طرف سے بڑھتے خطرات کی روک تھام کے لیے عالمی برادری کے ساتھ مل کر کام کرنے کا بہترین موقع ہے۔ جس طرح عرب ممالک نے داعش کو عسکری اور فکری طور پر کچلنے کا عزم کیا ہے۔ اسی طرح ایران کے توسیع پسندانہ عزائم کو بھی نکیل ڈالنا ہوگی۔