.

شام : شامی فوج کا ہیلی کاپٹر اپوزیشن گروپوں کے ہاتھوں گر کر تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں اپوزیشن گروپوں نے جمعے کے روز مقبوضہ گولان کے پہاڑی علاقے کے قریب شامی حکومت کی فوج کا ایک ہیلی کاپٹر گرا دیا۔
شام میں انسانی حقوق کے سب سے بڑے نگراں گروپ المرصد کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمن کے مطابق جنگجو گروپوں نے ملک کے جنوب مغربی علاقے میں "بیت جن" قصبے کے نزدیک بشار کی فوج کے ایک ہیلی کاپٹر کو فضا میں میزائل کا نشانہ بنایا۔ یہ علاقہ لبنان کی سرحد اور گولان کے مقبوضہ پہاڑی علاقے سے قریب ہے۔

ابھی تک ہیلی کاپٹر میں سوار عملے کے انجام کے بارے میں معلوم نہیں ہو سکا۔ المرصد کے مطابق ہیلی کاپٹر علاقے کی فضا میں دھماکا خیز ڈرم گرانے کے مشن پر تھا۔

مذکورہ قصبے بیت جن اور اس کے اطراف کے علاقوں پر عسکری تنظیم ہیئہ تحریر الشام اور دیگر اسلام پسند گروپوں کا کنٹرول ہے۔
رامی عبدالرحمن نے بتایا کہ شامی حکومت کی فورسز نے ان علاقوں کا محاصرہ کر رکھا ہے جہاں اکتوبر کے اواخر سے لڑائی کی شدت میں اضافہ ہو گیا ہے۔

نومبر کے آغاز میں ان علاقوں میں بشار کی فورسز اور ہیئہ تحریر الشام کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں۔ یہ جھڑپیں شام کے پہاڑی علاقے گولان کے ایک قصبے حضر میں کار بم دھماکا ہونے کے بعد شروع ہوئیں۔ شام کے سرکاری میڈیا نے اس کارروائی کا الزام تحریر الشام تنظیم پر عائد کیا۔ دھماکے کے نتیجے میں 9 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔