.

ہلاکت سے قبل علی عبداللہ صالح کی آخری وڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوشل میڈیا پر سابق یمنی صدر علی عبداللہ صالح کی ایک وڈیو گردش میں آئی ہے جس کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ یہ پیر کے روز حوثی ملیشیا کے ہاتھوں قتل ہونے سے قبل صالح کی آخری وڈیو ہے۔

وڈیو میں صالح صنعاء میں اپنے گھر کے اندر اپنی سیاسی جماعت جنرل پیپلز کانگریس پارٹی کے بعض رہ نماؤں کے ساتھ نظر آ رہے ہیں۔ ان شخصیات میں یاسر العواضی اور عارف الزوکا شامل ہیں۔

بعض باخبر حلقوں کا کہنا ہے کہ یہ وڈیواتوار کے روز صالح اور حوثیوں کے درمیان بھڑکنے والی جھڑپوں کے آغاز کے موقع پر بنائی گئی۔ وڈیو کلپ میں یہ بات واضح طور پر سامنے آئی کہ صالح اور ان کے ساتھیوں کو فائرنگ کی آوازیں سنائی دیں جس پر صالح نے عواضی اور زوکا سے کہا کہ "ڈرو مت"۔

یاد رہے کہ پیر کے روز علی عبداللہ صالح کی ہلاکت کا اعلان کیا گیا تھا البتہ ان کے قتل کے حوالے سے متضاد تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ یمنی میڈیا اور پیپلز کانگریس کی قیادت کے مطابق صالح کو اُس وقت قتل کیا گیا جب وہ اپنے چند ساتھیوں کے ہمراہ صنعاء کے جنوب میں سنحان کے علاقے کی جانب جا رہے تھے۔ تاہم صالح کے بیٹے احمد کا کہنا ہے کہ ان کے والد کو حوثی ملیشیا کے ساتھ جھڑپوں کے دوران اُن کے گھر میں ہلاک کیا گیا۔