.

مشرقی شام میں ’داعش’ شکست فاش سے دوچار ہو چکی: پوتین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی صدر ولادی میر پوتین نے دعویٰ کیا ہے کہ مشرقی شام کے علاقوں میں شدت پسند گروپ ’داعش‘ کا مکمل خاتمہ کر دیا گیا ہے۔

نیزنی نوفگورڈ شہر کے دورے کے دوران ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پوتین نے کہا کہ وزیر دفاع سیرگی شویگو نے انہیں بدھ کو یہ اطلاع دی ہے کہ دریائے فرات کے مشرقی اور مغربی کناروں پر داعش کے خلاف جاری آپریشن کامیابی سےمکمل کرلیا گیا ہے۔ اب ان علاقوں میں داعش کو مکمل طور پر ختم کر دیا گیا ہے۔

صدر پوتین کا کہنا تھا کہ علاقے میں داعش کے اکا دکا دہشت گرد انفرادی نوعیت کی مزاحمتی کارروائیاں کر سکتے ہیں۔

درایں اثناء روسی فوج کے ایک جنرل فالیری گیراسیموف نے ایک تقریب سے خطاب میں کہا ہے کہ شام میں داعش اور اس سے منسلک تمام گروپ کچل دیے گئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ مشرقی شام میں داعش کے زیر تسلط کوئی علاقہ نہیں بچا ہے تاہم ان کا کہنا تھا کہ بعض مقامات پر داعش کے جنگجو چھپ کر کاررائیاں کرسکتے ہیں۔

روسی جنرل نے کہا کہ دیر الزور میں داعش کے خلاف کارروائی کے لیے فوج نے مقامی قبائل اور کردوں کی بھرپور مدد کی ہے۔