.

حوثی باغیوں نے یتیم بچیوں کا 30 ملین ریال کا بہبود فنڈ بھی لوٹ لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کےخلاف سرگرم ایران نواز حوثی شدت پسندوں نے ملک میں لوٹ مار کا بازار گرم کر رکھا ہے۔ مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ باغیوں نے صنعاء میں یتیم بچیوں کی کفالت اور بہبود کے لیے قائم کردہ ایک یتیم خانہ پر چھاپہ مار کر وہاں پر موجود یتیم بچیوں اور بچوں کے لیے رکھے گئے بہبود فنڈز بھی لوٹ لیے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق حوثیوں نے الرحمۃ انسانی بہبود فاؤنڈیشن کے صنعاء میں قائم ’دار الرحمۃ‘ مرکز کی چیئرپرسن رقیہ الحجری کے گھر پر چھاپہ مارا۔ چھاپے کے دوران رقیہ الحجری کے دو بیٹوں کو بھی اغواء کر لیا گیا۔

مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ مسلح حوثی شدت پسندوں نے رقیہ عبداللہ کے گھر اور رہائش کے قریب دار الرحمۃ مرکز پر چھاپہ مارا اور وہاں پر یتیم بچیوں کی کفالت کے لیے رکھے گئے 30 ملین یمنی ریال لوٹ لیے۔ چھاپے کے دوران حوثیوں نے خاتون سماجی کارکن الحجری کے دو بیٹوں یونس اور الیاس فضل علی عبدالولی الحلالی کو حراست میں لینے کے بعد نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا۔ تاحال ان کے ٹھکانے کا کوئی پتا نہیں چل سکا۔