.

’’شام میں لڑائی سے حزب اللہ نے جدید حربی مہارتیں سیکھی ہیں‘‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل نعیم قاسم نے شام کے شہروں کی آزادی میں اپنی جماعت کے کردار کو سراہا ہے اور کہا ہے کہ صدر بشار الاسد کی فوج کے شانہ بشانہ لڑنے سے حزب اللہ کے جنگجوؤں کو نئی نئی حربی مہارتیں سیکھنے کا بھی موقع مل گیا ہے۔

ایران کی نیم سرکاری خبررساں ایجنسی تسنیم کے مطابق نعیم قاسم نے تہران کی جامعہ الامام الصادق میں تقریر کرتے ہوئے اعتراف کیا ہے کہ شام میں صدر بشارالاسد کی وفادار فوج کے ساتھ مل کر باغیوں کے خلاف لڑنے سے قبل ان کے جنگجو صرف مشین گن اور میزائل چلانا جانتے تھے جبکہ وہ ٹینکوں جیسے بھاری جنگی آلات چلانے کے بارے میں کچھ نہیں جانتے تھے مگر اب انھیں شام میں لڑائی کے نتیجے میں زیادہ تجربہ حاصل ہوگیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ’’ جب ہم شام گئے تو وہاں ہم نے صحرا میں لڑنا سیکھا ہے اور ہم نے شہروں میں لڑائی سیکھی ہے اور یہ بھی کہ شہروں ، ایک مکان اور ایک گلی کو کیسے آزاد کرایا جاتا ہے ۔اب ہم ٹینک چلانے اور ہر قسم کے میزائلوں کے استعمال میں ماہر ہوگئے ہیں‘‘۔