.

یمن : حوثیوں کے سرغنے کا سر کچلنے کے لیے صعدہ میں عسکری کُمک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرکاری فوج نے منگل کے روز ملک کے شمال میں حوثی ملیشیا کے ایک گڑھ صعدہ کی جانب بڑے پیمانے پر عسکری کُمک بھیجی ہے۔ یہ کُمک صعدہ کو آزاد کرانے اور جبال مران کے غاروں میں حوثی باغیوں کے سرغنے عبدالملک الحوثی کو ہلاک کرنے کے لیے عسکری آپریشن شریک ہو گی۔

صعدہ کے محاذ کے کمانڈر بریگیڈیئر جنرل عبید الاثلہ نے دو فوجی بریگیڈز کے اپنے تمام تر سامان کے ساتھ پہنچنے کی تصدیق کی۔ الاثلہ نے کہا کہ باغیوں نے ملک کو تباہ ہی کے ایسے مقام لا کھڑا کیا ہے جس کی مثال ہماری جدید تاریخ میں نہیں ملتی۔ انہوں نے عرب اتحاد کے کردار کو گراں قدر قرار دیتے ہوئے صعدہ اور غرامیل کے محاذوں پر سرکاری فوج کی کامیابیوں کو سراہا۔

ادھر منگل کے روز صعدہ صوبے کے علاقے البقع میں اتحادی طیاروں کی بم باری سے دو حوثی رہ نما ہلاک ہو گئے۔ عسکری ذرائع کے مطابق دونوں افراد کے ساتھ ان کی ملیشیا کے متعدد ارکان مارے گئے۔

یمنی فوج نے صعدہ کے وسط میں وسیع پیمانے پر عسکری آپریشن کے دوران زمینی طور پر پیش قدمی کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ اس دوران یمنی فوج کو عرب اتحادی طیارں کی بھرپور معاونت حاصل ہے۔

دوسری جانب عسکری ماہرین کے نزدیک صعدہ کا معرکہ تزویراتی اہمیت کا حامل ہے۔ اس کی آزادی کا مطلب حوثیوں کے ایرانی نواز فرقہ وارانہ منصوبے کا اختتام ہے۔ اس کے علاوہ صعدہ کے پڑوس میں سعودی عرب کی حدود بھی محفوظ ہو جائے گی۔