.

سعودی عرب میں خلیجی ممالک کے ڈرائیونگ لائسنس قابلِ قبول ہوں گے ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ٹریفک پولیس اور روڈ سکیورٹی انتظامیہ نے اس امر کی تصدیق کی ہے کہ خلیج تعاون کونسل کے ممالک کی جانب سے جاری قانونی ڈرائیونگ لائسنسوں کو سعودی ڈرائیونگ لائسنس سے تبدیل کیا جا سکتا ہے۔

سعودی ٹریفک پولیس کے قوانین میں آرٹیکل 37 کے مطابق وہ لوگ جو مملکت میں متعلقہ انتظامیہ کی جانب سے تسلیم شدہ غیر ملکی یا بین الاقوامی ڈرائیونگ لائسنس کے حامل ہیں انہیں دوبارہ سے ڈرائیونگ ٹیسٹ دینے کی ضرورت نہیں۔ معلوم رہے کہ سعودی عرب کا دورہ کرنے والی خواتین اگر تسلیم شدہ بین الاقوامی یا غیر ملکی ڈرائیونگ لائسنس کی حامل ہیں تو وہ مملکت میں داخل ہونے کے بعد ایک برس تک یا پھر لائسنس کی مدت ختم ہونے تک (جو تاریخ پہلے آئے) گاڑی چلانے کی اہل ہوں گی۔

ٹریفک انتظامیہ کے مطابق مملکت میں قوانین کے مطابق خواتین کو موٹر سائیکل اور ٹرک چلانے کی بھی اجازت ہو گی۔

ٹریفک پولیس اور روڈ سکیورٹی انتظامیہ کی جانب سے خواتین کے گاڑی چلانے اور لائسنسس کے حصول سے متعلق 40 سے زیادہ سوالات کے جوابات جاری کیے گئے ہیں۔ اس منصوبے پر آئندہ برس جون سے عمل درامد شروع ہو گا۔

سعودی فرماں روا شاہ سلمان نے 26 ستمبر 2017 کو جاری ایک فرمان میں مملکت میں خواتین کو گاڑی چلانے کی اجازت اور ڈرائیونگ لائسنس جاری کرنے کا حکم دیا تھا۔