.

سوشل میڈیا پر اماراتی وزیر خارجہ کی حمایت میں مہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سائبر میدان میں سفارتی بحران کے حوالے سے متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ شیخ عبداللہ بن زاید کی حمایت کی مہم کا آغاز ہو گیا ہے۔ یہ پیش رفت تُرک ذمّہ داران جن میں صدر رجب طیب ایردوآن سرفہرست ہیں ان کے ساتھ ٹوئیٹس اور بیانات کے تبادلے کے بعد سامنے آئی ہے۔

بحران کا آغاز اماراتی وزیر خارجہ کی ایک ری ٹوئیٹ سے ہوا جس میں مدینہ منورہ کے مکینوں کے خلاف آخری ترک ذمّے دار کے جرائم کا ذکر کیا گیا تھا۔ اس ٹوئیٹ میں جدید ترک ریاست کے عوام یا قیادت کا ذکر نہیں تھا۔

تاہم ٹوئیٹ کے متن میں تاریخی روایت نے صدارتی سطح پر ترکی کے غضب کو جنم دے دیا۔ ایردوآن کے دفتر نے ٹوئیٹ کو تُرکوں کے لیے اہانت شمار کیا۔ اس کے نتیجے میں ترک صدر کا غصّے سے بھرپور ردّ عمل پیدا ہوا اور ان کے ترجمان کی جانب سے پوسٹ کے مواد کی مذمت میں تشدد سے بھرپور موقف سامنے آیا۔

بہرکیف سوشل میڈیا بالخصوص ٹوئیٹر پر کئی مہمیں شروع کر دی گئیں۔ ٹوئیٹر پر متعارف کرائی جانے والی مہم کا عنوان ہیش ٹیگ #كلنا_عبدالله_بن_زايد ہے۔ یہ نہ صرف امارات بلکہ مملکتِ سعودی عرب اور مصر میں بھی مختصر عرصے میں سب سے زیادہ مقبول ہیش ٹیگ بن گیا۔