.

خواتین اب بطور ڈرائیور سعودی عرب میں ملازمت اختیار کر سکیں گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں اگلے مہینے سے گھریلو ڈرائیور کے طور پر خواتین ملازمین کو بھی مملکت بلوایا جا سکے گا جو ملک میں خواتین کو ڈرائیونگ کی اجازت کے بعد ایک بڑی تبدیلی شمار کی جا رہی ہے۔

اب تک حکومتی نظام میں کہیں بھی ڈرائیور ملازم خاتون کا کوئی خانہ نہیں۔ آئندہ چل کر اس کا اضافہ ہو گا۔

محکمہ شماریات نے بتایا ہے کہ گھریلو ملازمین میں شامل ڈرائیوروں کی تعداد تقریباً ڈیڑھ لاکھ ہے۔ اب تک کوئی گھریلو ڈرائیور خاتون اس میں شامل نہیں۔ وجہ یہ ہے کہ ابھی تک خواتین کو ڈرائیونگ کی اجازت نہیں تھی۔ عملدرآمد بھی ابھی شروع نہیں ہوا۔ گھریلو حلقوں کی جانب سے سعودی عرب میں خواتین ڈرائیوروں کو ملازمت دینے اور انہیں سعودی عرب بلوانے کے مطالبات شروع کر دیئے ہیں۔