.

حرمِ مکّی کے قالینوں کی صفائی اس طرح انجام دی جاتی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حرم مکّی کے طول و عرض میں بچھے سبز رنگ کے قالینوں کی مجموعی تعداد 30 ہزار کے قریب ہے۔ ان کی مجموعی لمبائی تقریبا سو کلومیٹر بنتی ہے۔

امور حرمین کی پریذیڈنسی ان قالینوں کو گلاب کی بھینی مہک سے معطر کرنے کے لیے خصوصی توجہ دیتی ہے تا کہ بیت اللہ کے زائرین پوری یک سوئی کے ساتھ اپنی عبادات انجام دینے میں مشغول رہ سکیں۔

قالینوں کی صفائی روزانہ انجام دی جاتی ہے۔ اس کے لیے مکہ مکرمہ کے علاقے کدی میں واقع گودام کے اندر 5 مراحل پر مشتمل کارروائی عمل میں لائی جاتی ہے۔

پہلے مرحلے میں جدید ترین مشینوں کے ذریعے قالین پر سے گرد و غبار صاف کی جاتی ہے۔

دوسرے مرحلے میں جدید خود کار آلات کے ذریعے خصوصی مواد سے قالین کو دھویا جاتا ہے۔ اس میں کسی انسان کا عمل دخل نہیں ہوتا۔

قالین کو نچوڑے جانے کے بعد تیسرے مرحلے کے لیے خود کار پُل پر رکھ دیا جاتا ہے۔ یہاں ہر ڈیڑھ منٹ میں اوسطا 3 قالین خشک کیے جاتے ہیں۔

اس کے بعد چوتھے مرحلے میں ورکر قالینوں کو مکمل طور پر سُکھانے کے لیے دھوپ میں چھوڑ دیتے ہیں۔ گرمیوں میں یہ دورانیہ ایک دن اور سردیوں میں دو دن پر مشتمل ہوتا ہے۔

پانچویں اور آخری مرحلے میں قالین کو بھرپور توجہ سے پھر صاف کیا جاتا ہے تا کہ کسی قسم کی رہ جانے والی گرد کو ختم کیا جا سکے۔ اس کے بعد قالین پر عرقِ گلاب چھڑکا جاتا ہے۔

یوں قالینوں کی دھلائی اور پاکی کا عمل اختتام کو پہنچتا ہے۔

حرم مکی کے قالینوں لانڈری کے نگراں محمد العتیبی کے مطابق گودام میں روزانہ 200 قالین لائے جاتے ہیں۔