.

حوثیوں کو کسی بھی مذاکرات میں شریک کرنے کی 5 شرائط

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے نائب وزیراعظم اور وزیر خارجہ عبدالملک المخلافی نے انکشاف کیا ہے کہ حکومت نے حوثی ملیشیا کے ساتھ کسی بھی مذاکرات میں شرکت قبول کرنے کے لیے 5 نئی شرائط کا تعین کیا ہے۔

عربی اخبار "الشرق الاوسط" نے المخلافی کے حوالے سے بتایا ہے کہ مذکورہ شرائط یہ ہیں :

1 ۔ باغی ملیشیا یمن میں سیاست دانوں اور شہریوں کے خلاف تمام جرائم کا ارتکاب روک دے۔

2۔ بنا کسی استثناء کے تمام گرفتار شدگان کو رہا کیا جائے۔

3 ۔ یمن کے شہروں پر میزائلوں اور حملوں کو روک دیا جائے۔

4 ۔ امدادی سامان کو بنا روکے شہریوں تک پہنچنے کی اجازت دی جائے۔

5 ۔ عرب لیگ کے منصوبے ، اقوام متحدہ کی قراردادوں اور قومی مکالمہ کانفرنس کے اعلامیے پر کاربند رہنے کے حوالے سے واضح طور حامی بھرنا اور ان تین کے سوا کسی امر کو مذاکرات میں بنیاد نہ بنانا۔

یمنی حکومت کے ایک ذریعے نے بتایا ہے کہ آئینی حکومت کوشش کر رہی ہے کہ "جنرل پیپلز کانگریس" پارٹی کے وفد کو کسی بھی امن مشاورت کے دوران حکومتی فریق میں شامل کیا جائے۔