.

حوثیوں نے یمن کے نائب صدر کا بیٹا اغوا کر لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

صنعاء میں ذرائع نے بتایا ہے کہ حوثی ملیشیا نے جمعے کے روز سنحان ضلعے کے گاؤں "قریۃ بیت" میں یمن کے نائب صدر علی محسن الاحمر کے گھر پر دھاوا بول کر اُن کے بیٹے محسن علی محسن اور گھر کے درجنوں پہرے داروں کو اغوا کر لیا۔ حوثی باغیوں کے مقرّب ذرائع کے مطابق یہ کارروائی سابق صدر علی عبداللہ صالح کی خصوصی سکیورٹی کے کمانڈر اور اُن کے بیٹے بریگڈیئر جنرل طارق محمد کے نمودار ہونے کے بعد کی گئی ہے اور اس کا مقصد سنحان کے لوگوں کے گرد گھیرا تنگ کرنا ہے۔

اس سے قبل طارق عبداللہ جمعرات کے روز یمن کے جنوب مشرقی صوبے شبوہ کے شہر عتق پہنچا تھا ، یہ علاقہ یمن کی آئینی حکومت کے زیر کنٹرول ہے۔ یہ طارق کی ہلاکت کی خبروں اور بچ جانے کی افواہوں کے بعد اُس کا پہلا ظہور تھا۔

طارق محمد کی کئی تصاویر جاری کی گئی تھیں جن میں وہ جنرل پیپلز کانگریس پارٹی کے جنرل سکریٹری عارف الزوکا کی ہلاکت پر تعزیت پیش کرتے ہوئے نظر آیا۔ الزوکا کو دسمبر کے اوائل میں صنعاء میں ان کے گھر پر حوثی باغیوں نے قتل کر دیا تھا۔