.

یمن کا بحران جامع فوجی مقابلے کی جانب بڑھ رہا ہے: بن دغر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے وزیر اعظم احمد بن دغر نے ملک کے جنوب میں بسنے والے علاحدگی پسندوں پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ عدن میں انقلاب کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے اتوار کے روز عرب اتحاد پر زور دیا کہ وہ آئینی حکومت کو بچانے کے لیے مداخلت کرے۔ بن دغر کے مطابق یمن کا بحران دھیرے دھیرے جامع فوجی مقابلے کی جانب بڑھ رہا ہے۔ یمنی وزیراعظم نے واضح کیا کہ عدن میں جو کچھ ہو رہا ہے اس سے ایران اور حوثیوں کو فائدہ پہنچے گا۔

ادھر ذرائع نے العربیہ کو بتایا ہے کہ جنوب کے علاحدگی پسندوں نے عدن کے علاقے خور مکسر میں حکومت کی عمارت پر قبضہ کر لیا ہے جب کہ عدن کے ہوائی اڈے کو بھی پروازوں کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔

اس سے قبل عدن میں سکیورٹی ذرائع نے بتایا تھا کہ صدارتی حفاظتی فورس اور جنوب میں علاحدگی پسند عبوری کونسل کے مسلح عناصر کے درمیان جھڑپوں کا دائرہ شہر کے وسطی اور شمالی علاقوں تک پھیل گیا۔ جھڑپوں میں مختلف نوعیت کے ہتھیاروں کا استعمال کیا گیا اور اس دوران فریقین کے درجنوں افراد ہلاک اور زخمی ہوئے۔

مقامی ذرائع کے مطابق صدارتی حفاظتی فورس کے اہل کاروں کو اتوار کی صبح سے عدن شہر کے مشرق اور شمال میں داخلی راستوں پر تعینات کر دیا گیا تھا تا کہ شہر میں انارکی اور شورش کو روکا جا سکے۔