.

ٹیکسیوں یا بسوں کیلئے خواتین ڈرائیور درآمد کرنے کا کوئی ارادہ نہیں

سعودی خواتین مردوں کی طرح ٹیکسی چلا سکتی ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پبلک ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے قائم مقام سربراہ ڈاکٹر رمیح الرمیح نے واضح کیا ہے کہ ٹیکسیوں یا بسوں کیلئے باہر سے خواتین ڈرائیور درآمد کرنے کا کوئی ارادہ نہیں۔

سعودی خواتین مردوں کی طرح ٹیکسی چلا سکتی ہیں۔ ہمارے یہاں غیر ممالک سے خواتین ڈرائیور طلب کرنے کا نہ کوئی رجحان ہے اور نہ ہی ارادہ۔ اس قسم کی ملازمتوں کیلئے ہماری بیٹیاں اور بہنیں زیادہ استحقاق رکھتی ہیں۔

انہوں نے ذرائع سے بات کرتے ہوئے کہا کہ لیڈیز ٹیکسی کا نیا نظام تیار کیا جا رہا ہے۔ خواتین کو ڈرائیونگ کی اجازت ملنے پر جاری کر دیا جائیگا۔ الرمیح نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ خواتین ٹرینیں بھی چلا سکتی ہیں۔ البتہ ابھی اس کی کوئی اشد ضرورت نہیں۔ امیرہ نورہ یونیورسٹی میں اس قسم کا ایک تجربہ بھی کیا جا رہا ہے۔