.

تعز میں گھمسان کی جنگ، اہم حوثی کمانڈر سمیت متعدد جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی سرکاری فوج اور ایران نوازحوثی باغیوں کے درمیان تعز گورنری میں متعدد مقامات پر گھمسان کی لڑائی کی اطلاعات ہیں۔ تازہ جھڑپوں میں جنوب مشرقی تعز میں نقیل الصلو کے مقام پر ایک اہم حوثی کمانڈر سمیت متعدد جنگجو ہلاک اور زخمی ہوگئے۔

یمنی فوج کے بریگیڈ 35 کے ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ فوج نے حوثیوں کی طرف سے کیا گیا ایک بڑا حملہ ناکام بنا دیا۔ لڑائی کےدوران حوثیوں کا بریگیڈ کمانڈر بریگیڈیئر محمد عبدالخالق اپنے متعدد ساتھیوں سمیت ہلاک ہوگیا۔

اطلاعات کے مطابق حوثی کمانڈر کو اس وقت ہلاک کیا گیا جب وہ الصلو اور دمنہ خدیر ڈائریکٹوریٹ کے درمیان سے گذر رہا تھا۔

متقول کمانڈربریگیڈیئر محمد عبدالخالق الصلو محاذ پر اہم عسکری کارروائیوں کا ذمہ دار رہا ہے۔

ادھر تعز میں التشریفات کیمپ، محمد علی عثمان اسکول اور الکریفات محاذ پر بھی حوثیوں اور سرکاری فوج کے درمیان گھسان کی لڑائی کی اطلاعات ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سرکاری فوج نے تبۃ المقرمی اور تبۃ السلال کے مقامات پر متمرکز حوثیوں پر حملہ کیا۔ جمعہ کے روز ہونے والی اس لڑائی میں سرکاری فوج نے توپ خانے سے باغیوں کے ٹھکانوں پر شیلنگ کی۔

جمعہ کے روز سعودی عرب کی قیادت میں سرگرم فوجی اتحاد کے جنگی طیاروں نے باغیوں کے ٹھکانوں پر فضائی بم باری کی جس کے نتیجے میں باغیوں کا ایک ٹینک اور ایک فوجی گاڑی تباہ ہوگئی۔

ادھر الحدیدہ گورنری کے ڈ حیس ڈاریکٹوریٹ، شمیر ٹاؤن اور مغربی تعزمیں مقبنہ کے مقامات پر حوثیوں کےٹھکانوں پر سات حملے کیے جن میں باغیوں کے اسلحہ کےذخائر کوتباہ کیا گیا۔