.

شمالی کوریا شام اور میانمار کواسلحہ فروخت کرتا رہا:خفیہ رپورٹ میں انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے آزاد مبصرین نے ایک خفیہ رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ شمالی کوریا اسلحہ کی فروخت پر عاید کردہ عالمی پابندیوں کی خلاف ورزی کا مرتکب ہو رہا ہے۔ رپورٹ کے مطابق شمالی کوریا کی جانب سے شامی حکومت اور میانمار کو اسلحہ اور بھاری مقدار میں گولہ بارود فروخت کیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے آزاد مبصرین کی تیار کردہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شمالی کوریا نے2017ء کے دوران شام اور میانمار کو 20کروڑ ڈالر مالیت کا اسلحہ فروخت کیا۔

یہ رپورٹ سلامتی کونسل کی عالمی پابندیوں کی نگران کمیٹی کو بھی ارسال کی گئی ہے جس کی تفصیلات خبر رساں ادارت’روئٹرز‘ کو بھی موصول ہوئی ہیں۔ جمعہ کے روز شائع ہونے والی اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ شمالی کوریا نے چین، جنوبی کوریا، روس، ملائیشیا، ویت نام اور دیگر ملکوں کی بندرگاہوں سے بحری جہازوں کے ذریعے جعلی دستاویزات کے ذریعے یہ اسلحہ میانمار اور شام کو پہنچایا۔ یہ اسلحہ براہ راست شمالی کوریا کے نام سے نہیں بلکہ چین اور روس جیسے ناموں کو استعمال کیا گیا۔

شمالی کوریا کی طرف سے اس رپورٹ پر کوئی رد عمل جاری نہیں کیا گیا جب کہ چین اور روس نے اس پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئےکہا ہے کہ وہ پیانگ یانگ پر اقوام متحدہ کی پابندیوں کے نفاذ میں مدد کریں گے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ انہوں نے بیلسٹک میزائلوں کےشعبے کے ماہرین سے اس معاملے میں مدد حاصل کی۔ انہوں نے بتایا کہ سنہ 2012ء سے 2017ء کے دوران شمالی کوریا سے شام کے سائنس ریسرچ سینٹر کو 40 ٹرک اسلحہ بھیجا گیا مگر اسلحہ کی یہ ترسیل خفیہ رکھی گئی تھی۔