.

اتحادی افواج کی فضائی معاونت کے اب بھی محتاج ہیں : العبادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی وزیراعظم حیدر العبادی نے باور کرایا ہے کہ بین الاقوامی اتحادی افواج کی تعداد میں بتدریج کمی کے لیے حکومتی منصوبہ موجود ہے۔ تاہم ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ عراق کو اب بھی اتحادی افواج کی فضائی معاونت کی ضرورت ہے۔

دوسری جانب عراقی حکومت کے ترجمان سعد الحدیثی نے برطانوی خبر رساں ایجنسی سے گفتگو میں بتایا کہ عراقی حکام کی جانب سے داعش تنظیم کے خلاف "فتح" کے اعلان کے بعد امریکی افواج نے عراق میں اپنی تعداد کم کرنا شروع کر دی۔ انہوں نے واضح کیا کہ "یہ انخلاء ابھی اپنے ابتدائی مرحلے میں اور یقینا اس مرحلے میں حتمی انخلاء کے آغاز پر غور نہیں کیا جا سکتا"۔

دوسری جانب داعش تنظیم کے خلاف برسر پیکار اتحادی افواج کی کمان نے اعلان کیا ہے کہ اُس نے عراق میں اپنی کارروائیوں کا مشن تبدیل کر دیا ہے اور "اس سلسلے میں اب تمام تر توجہ جنگی کارروائیوں میں معاونت سے ہٹ کر داعش تنظیم کے خلاف عسکری فتح کو پختہ کرنے پر دی جائے گی"۔

اتحاد کی جانب سے جاری سرکاری بیان کی کاپی العربیہ کو موصول ہوئی ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ موصل کی فتح نے داعش کے خلاف اگلی کامیابیوں کو تیز کر دیا اور تنظیم اپنے قبضے میں موجود اراضی کے 98 فی صد حصّے سے ہاتھ دھو چکی ہے۔ تاہم بیان میں خبردار کیا گیا ہے کہ داعش تنظیم ممکنہ طور پر "بغاوت" کی کارروائیوں کی طرف جا سکتی ہے اور وہ اب بھی قتل کی کارروائیاں کرنے کی قدرت رکھنے کے سبب شہریوں اور امن و استحکام کے لیے خطرہ ہے۔