.

سعودی جنگی طیاروں کی ڈیل کے لیے 2 ارب،60 کروڑ ریال کی ڈیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مشرق وسطیٰ کی ایئر کرافٹ انجنز لیمیٹڈ کمپنی کےچیف ایگزیکٹو نے سعودی حکومت کے ساتھ جنگی طیاروں کو انجن فراہم کرنے اورانجنوں کی مرمت کے لیے ایک غیرمعمولی ڈیل کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مڈل ایسٹ ایئر کرافٹ انجنز لیمیٹڈ کے چیف ایگزیکٹو عبداللہ العمری کا کہنا ہے کہ کمپنی نے جنرل الیکٹرک اور سعودی عرب کی بری افواج کے ساتھ نئے جنگی طیاروں ’F15.s، SA ،F15 اور T700 کے انجنوں کی مرمت کے ساتھ ساتھ بلیک ہاک ہیلی کاپٹروں کی مرمت کے لیے سعودی عرب کی وزارت نیشنل گارڈز کےساتھ ایک معاہدہ کیا ہے۔

الریاض میں جاری ’افد2018‘ فوجی نمائش کے موقع پر ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے العمری نے کہا کہ جنگی طیاروں کی خریداری اور ان کی مرمت کی ڈیل پر پانچ سے سات سال کے دوران 2 ارب 60 کروڑ ریال خرچ کیے جائیں گے جب کہ اس سے سعودی عرب میں 250 سے300 نئی ملازمتیں تخلیق ہوں گی۔

سعودی عرب کی کمپنیوں کی غیرملکی فرموں کے ساتھ ڈیل اور سعودی دفاعی اداروں اور دفاعی صنعت کے معاہدوں سے مملکت میں مقامی سطح پر فوجی صنعت کے فروغ میں مدد ملے گی۔ سعودی عرب ان انجنوں کے استعمال کا دوسرا بڑا صارف ہے کیونکہ وزارت دفاع کے 45 فی صد اخراجات ان انجنوں کی خریداری اور مرمت پر ہوتے ہیں۔

معاشی فواید

ڈاکٹر العمری نے کہا کہ انجنوں کی مرمت کی مقامی سطح پر صنعت سے سعودی عرب کوغیرمعمولی مالی فواید بھی حاصل ہوں گے۔ مقامی ملٹری صنعت کو فروغ ملے گا، کارخانوں اور کمپنیوں میں روزگار کے نئےمواقع پیدا ہوں گے مسلح افواج کو تربیت اور عسکری شعبوں میں اضافے کا موقع ملے گا۔

اس ڈیل کا ایک بڑا فائدہ سپلائی دورانئے، طیاروں کے انجنوں کی مرمت کے کام کی مدمت 24 ماہ سے کم ہو کر6 ماہ پر آجائے گی کیونکہ بیرون ملک سے انجنوں کی مرمت پردو سال کا عرصہ لگ جاتا ہے۔

الریاض میں جاری فوجی نمائش میں آج بدھ کو مزید معاہدے بھی کیے جائیں گے۔ العمری نے بتایا کہ مڈل ایسٹ انجنز ریپئرنگ کمپنی ایڈوانس الیکٹرانکس سمیت کئی دوسری کمپنیوں کے ساتھ بھی باہمی تعاون کے معاہدے کرے گی۔