.

خلیج عرب کی سکیورٹی مصر کی داخلی سلامتی کا حصہ ہے: صدر السیسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری صدر عبد الفتاح السیسی نے کہا ہے کہ ’’ خلیج عرب کی سلامتی مصر کی سلامتی کا لازمی حصہ ہے‘‘۔انھوں نے یہ بات سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے سوموار کے روز قاہرہ میں گفتگو کرتے ہوئے کہی ہے۔

دونوں رہ نماؤں نے ملاقات میں سعودی عرب اور مصر کے درمیان دو طرفہ تعلقات کے مختلف پہلوؤں اور اسلامی اور عرب دنیا کو درپیش مختلف چیلنجز پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا ہے اور خطے میں بیرونی مداخلت کے مقابلے کے لیے مشترکہ کوششوں کی ضرورت پر زوردیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق ولی عہد شہزادہ محمد اور مصری صدر نے دونوں ملکوں کے درمیان مختلف شعبوں میں دو طرفہ تعلقات بڑھانے کے طریقوں پر بھی بات چیت کی ہے۔انھوں نے مشرقِ وسطیٰ میں ہونے والی تازہ پیش رفت ،علاقائی سلامتی و استحکام اور دہشت گردی سے نمٹنے سے متعلق مختلف امور پر بھی تبادلہ خیال کیا ہے۔انھوں نے عرب تعاون کے فروغ کے لیے مشترکہ کوششوں کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

صدر السیسی اور سعودی ولی عہد کے درمیان اتحادیہ محل میں ملاقات کے بعد دونوں ملکوں میں مختلف شعبوں میں تعاون کے فروغ سے متعلق سمجھوتے طے پائے ہیں اور ان پر دونوں ملکوں کے متعلقہ عہدہ داروں نے دست خط کیے ہیں۔

مفاہمت کی ایک یادداشت کے تحت سعودی ، مصری سرمایہ کاری فنڈ کو فعال بنانے کے لیے پہلے سے طے شدہ ایک سمجھوتے میں ترمیم کی گئی ہے۔اس کے علاوہ دونوں ملکوں نے آلودگی کے خاتمے اور ماحول کے تحفظ کے لیے بھی ایک سمجھوتے پر دست خط کے ہیں۔

مصری صدر کے ترجمان بسام راضی کے مطابق شہزادہ محمد بن سلمان اور عبدالفتاح السیسی نے بات چیت میں دوطرفہ اقتصادی تعلقات کے فروغ اور بحیرہ احمر میں سیاحت کے شعبے میں نئے منصوبے شروع کرنے سے اتفاق کیا ہے۔