.

ہماری میزائل پیداوار میں 3 گُنا اضافہ ہوا ہے: ایرانی پاسداران انقلاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی پاسداران انقلاب کے ایک سینئر کمانڈر بریگڈیئر جنرل امیر علی حاجی زادہ کا کہنا ہے کہ ایران نے اپنے میزائلوں کی پیداوار میں تین گُنا اضافہ کر لیا ہے۔

ایرانی نیوز ایجنسی فارس کے مطابق بدھ کے روز سامنے آنے والے بیان میں حاجی زادہ نے اس مدت کا ذکر نہیں کیا جس کے دوران یہ اضافہ واقع ہوا۔

حاجی زادہ کا کہنا ہے کہ "ماضی میں ہمیں بہت سے فریقوں کے سامنے اپنے افعال کی وضاحت کرنا پڑتی تھی لیکن اب معاملہ ایسا نہیں رہا"۔ سینئر ایرانی کمانڈر کے مطابق ایرانی حکومت ، پارلیمنٹ اور دیگر عہدے داران خاص طور پر زمین سے زمین تک مار کرنے والے میزائلوں کی ضرورت کے حوالے سے متفق ہیں۔

فرانسیسی وزیر خارجہ جان ایف لودریاں نے پیر کے روز ایران کا دورہ کیا۔ اس دورے کا مقصد جوہری معاہدے کے لیے ایک بار پھر یورپ کی سپورٹ باور کرانا تھی۔ اس معاہدے نے دنیا کے سامنے تہران کی معیشت کے دروازے کھول دیے۔ لودریاں نے ایران کے میزائل پروگرام اور شمرق وسطی کے تنازعات میں تہران کے کردار کے حوالے سے امریکی اندیشوں کو بھی دُہرایا۔

لودریاں کا حالیہ دورہ فرانس کی اُن کوششوں کی عکاسی کرتا ہے جو وہ 2015 میں ایران اور بڑی عالمی طاقتوں کے درمیان طے پانے والے جوہری معاہدے کو بچانے کے لیے کر رہا ہے۔

امریکی صدر یہ دھمکی دے چکے ہیں کہ اگر معاہدے پر دستخط کرنے والے تین یورپی ممالک نے ایران کو مشرق وسطی میں اپنا رسوخ کم کرنے اور اپنے میزائل پروگرام پر روک لگانے کے لیے مجبور نہ کیا تو واشنگٹن معاہدے سے نکل جائے گا۔

ادھر سینئر ایرانی عہدے داران نے فرانسیسی وزیر خارجہ لودریاں کو آگاہ کیا ہے کہ بیلسٹک میزائل پروگرام پر کوئی مذاکرات نہیں ہوں گے۔