شامی فوج نے مشرقی الغوطہ کو تین حصوں میں تقسیم کردیا

بڑے شہر دوما کا مشرقی الغوطہ میں واقع باغیوں کے زیر قبضہ دوسرے علاقوں سے زمینی رابطہ منقطع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شامی فوج نے دارالحکومت دمشق کے نواح میں واقع علاقے مشرقی الغوطہ کو تین حصوں میں تقسیم کردیا ہے اور اس کے بڑے شہر دوما کا زمینی راستہ باغیوں کے زیر قبضہ دوسرے علاقوں سے منقطع کردیا ہے۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے ہفتے کے روز اطلاع دی ہے کہ شامی فوج نے دوما اور حرستا کے درمیان واقع مرکزی شاہراہ پر قبضہ کر لیا ہے۔اس کے علاوہ مشرقی الغوطہ میں واقع قصبے مسرابا پر بھی دوبارہ قبضہ کر لیا ہے۔

رصدگاہ کے مطابق شامی فورسز نے مشرقی الغوطہ کو تین حصوں میں تقسیم کردیا ہے۔ ان میں ایک حصہ دوما اور اس کے نواحی علاقوں پر مشتمل ہے،دوسرا حصہ مغرب میں واقع حرستا اور تیسرا حصہ مشرقی الغوطہ کے جنوب میں واقع باقی علاقوں پر مشتمل ہے۔

فرانسیسی خبررساں ایجنسی اے ایف پی کے دوما میں موجود نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہ آج دن بھر دوما پر توپ خانے سے گولہ باری اور فضائی حملے جاری رہے ہیں۔

شامی فوج اور اس کی اتحادی ملیشیاؤں نے 18 فروری کو مشرقی الغوطہ پر دوبارہ قبضے کے لیے یہ نئی کارروائی شروع کی تھی۔اس کے بعد سے شامی فوج نے تباہ کن فضائی حملوں کی مدد سے باغیوں کے زیر قبضہ مشرقی الغوطہ کا نصف علاقہ واپس چھین لیا ہے اور ان کی مسلسل پیش قدمی جاری ہے۔

رصدگاہ کے مطابق شامی فوج کی مشرقی الغوطہ میں واقع مختلف شہروں اور قصبوں پر گذشتہ تین ہفتے سے جاری تباہ کن فضائی بمباری اور زمینی گولہ باری کے نتیجے میں ڈھائی سو سے زیادہ بچوں سمیت 975شہری مارے گئے ہیں اور سیکڑوں زخمی ہوگئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں