جزیرہ کدمبل: تیراکوں، غوطہ خوروں اور شکاریوں کے خواب کی پُرسکون تعبیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے صوبے عسیر کے ساحل پر واقع جزیرہ "كِدَمبَل" اُن خوب صورت ترین قدرتی جزیروں میں سے ایک ہے جو مملکت میں جاری جامع ترقی کے سائے میں تاب ناک مستقبل کے منتظر ہیں۔ توقع ہے کہ یہ جزیرہ پورے سال سیاحت کے ایک مستقل مقام کے طور پر سامنے آئے گا جہاں شکار، تیراکی اور غوطہ خوری کے شوقین افراد مناسب ماحول سے لطف اندوز ہوں گے۔

جزیرہ کدمبل کی امتیازی خصوصیت اس کے تین اطراف موجود سفید ریت ہے۔ اس کی مغربی سمت موجود بلند پہاڑ آتش فشاں کی مانند نوک رکھتا ہے۔ یہ جزیرہ تین مربع کلو میٹر کے رقبے پر پھیلا ہوا ہے۔

جزیرے کی سیر کے لیے آنے والے افراد شکار کے لیے استعمال ہونے والی کشتیوں کے ذریعے 30 منٹ میں یہاں پہنچ سکتے ہیں۔ یہاں کا صاف شفاف اور خاموش پانی تیراکی اور غوطہ خوری کے شوقین افراد کے لیے آئیڈیل سمجھا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ براعظم افریقہ سے ہجرت کر کے آنے والے "بازوں" کے شکار کے لیے بھی بہترین مقام ہے۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی SPA سے گفتگو کرتے ہوئے عسیر صوبے میں سیاحت اور قومی ورثے کے ڈائریکٹر جنرل انجینئر محمد بن عبدالله العمره نے اس امر کی تصدیق کی کہ ایک سیاحتی رُوٹ تشکیل دینے کے لیے آپریشنل پلان پر کام جاری ہے۔ یہ رُوٹ اَبہا شہر سے شروع ہو کر جزیرہ کدمبل پہنچ کر اختتام پذیر ہو گا۔

گزشتہ ماہ القحمہ مرکز کی جانب سے منعقد کیے گئے موسمِ سرما کے میلے میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ دو ہفتوں تک جاری رہنے والے میلے کے دوران جزیرہ کدمبل کے لیے روزانہ دس بحری اسفار کا انتظام کیا گیا۔ اس کے نتیجے میں میلے میں آنے والے افراد کو اس جزیرے، اس کے قدرتی ماحول اور سیاحتی اہمیت کے بارے میں جان کاری حاصل ہوئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں