.

ایران پیسوں کے ذریعے عراقی انتخابات پر اثر انداز ہونے کی کوشش کر رہا ہے: امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے ایران پر آئندہ مئی میں ہونے والے عراقی پارلیمانی انتخابات میں مداخلت کا الزام عائد کیا ہے۔ عراقی وزیراعظم حیدر العبادی امریکا کی معاونت سے داعش تنظیم کے خلاف کامیاب جنگ کے بعد اب نئی مدت کے لیے اپنی جیت کو یقینی بنانے کے واسطے کوشاں ہیں۔

جمعرات کے روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے میٹس نے کہا کہ "ہمارے پاس اس بات کے باعث تشویش شواہد ہیں کہ ایران مال استعمال کر کے عراق میں انتخابات پر اثر انداز ہونے کی کوشش کر رہا ہے۔ یہ رقم امیدواروں اور ووٹوں پر رسوخ کے واسطے استعمال میں لائی جا رہی ہے"۔ تاہم امریکی وزیر دفاع نے اس حوالے سے کوئی تفصیلات یا شواہد پیش نہیں کیے۔

عراق میں 12 مئی کو مقررہ عام انتخابات کا وقت قریب آنے کے ساتھ ہی سیاسی میدان میں جوڑ توڑ میں اضافہ ہو گیا ہے جب کہ ایران اپنے ہمنوا گروپوں کی جیت کے لیے اپنا رسوخ استعمال کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

اس سے قبل امریکی خبر رساں ایجنسی نے کہا تھا کہ ایرانی رسوخ بغداد حکومت کی قیادت کرنے والی شیعہ قوتوں کی پوزیشن مضبوط کرنے میں ایک بڑا کردار ادا کرے گا۔ بالخصوص عراق میں سنی اکثریت علاقوں سے داعش تنظیم کے قلع قمع کے بعد جہاں ابھی تک بے گھر افراد اور جبری ہجرت جیسے مسائل درپیش ہیں۔