.

شامی فورسز کا مشرقی الغوطہ میں واقع دو اور قصبوں پر قبضہ ، 7000 شہریوں کا انخلا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی فوج نے ہفتے کے روز مشرقی الغوطہ کے جنوب میں واقع دو اور قصبوں پر قبضہ کر لیا ہے اور مزید علاقوں کی جانب پیش قدمی جاری رکھی ہوئی ہے جبکہ لڑائی کے نتیجے میں مزید ہزاروں افراد بے گھر ہوئے ہیں ۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے ہفتے کے روز اطلاع دی ہے کہ سرکاری فورسز نے مشرقی الغوطہ کے جنوب میں واقع کفر بطنا اور سقبا پر دوبارہ کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔

رصدگاہ نے مزید اطلاع دی ہے کہ شامی شہری ہزاروں کی تعداد میں مشرقی الغوطہ سے حکومت کے عمل داری والے علاقوں کی جانب جارہے ہیں اور جمعرات کے بعد سے مشرقی الغوطہ کے مختلف شہروں اور قصبوں سے سات ہزار سے زیادہ افراد اپنا گھربار چھوڑ کر چلے گئے ہیں۔

رصدگاہ کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان نے بتایا ہے کہ حموریہ اور اس کے نزدیک واقع قصبوں سے ان افراد کا انخلا ہوا ہے ۔شامی فورسز جمعرات کو اس علاقے میں داخل ہوئی تھیں۔

قبل ازیں ہفتے کے روز ہی مشرقی الغوطہ میں واقع قصبے زملکا میں فضائی حملے میں تیس افراد ہلاک ہوگئے ۔شامی رصدگاہ نے یہ نہیں بتایا کہ یہ فضائی حملے شامی فوج یا روسی طیاروں میں سے کس نے کیے ہیں۔

شامی فوج نے 18 فروری کو دارالحکومت دمشق کے نواح میں واقع باغیوں کے زیر قبضہ مشرقی الغوطہ پر دوبارہ قبضے کے لیے زمینی کارروائی اور فضائی حملوں کا آغاز کیا تھا۔اس کے بعد سے اس نے الغوطہ الشرقیہ کے 70 فی صد علاقوں کا باغیوں سے کنٹرول واپس لے لیا ہے۔