فلسطینیوں کا مفاد اولین ترجیح، سب کے لیے امن کی بات کریں گے:ولی عہد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے اپنے تاریخی دورہ امریکا کے دوران باور کرایا ہے کہ سعودی عرب فلسطینیوں کے مفادات کی حمایت پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے۔

اپنے کئی روزہ دورہ امریکا کے دوران ’سی بی ایس‘ ٹی وی کودیے گئےانٹرویو میں ولی عہد نے کہا کہ سعودی عرب اور امریکا کے تاریخی تعلقات 80 سال پر محیط ہیں۔ سعودی عرب مشرق وسطیٰ میں امریکا کا پرانا حلیف ہے۔

’سی بی ایس‘ ٹی وی کے پروگرام’60 منٹ‘ میں بات کرتے ہوئے سعودی ولی عہد نے کہا کہ ان کا ملک مشرق وسطیٰ میں امن کا عمل آگے بڑھانے کے لیے ہرممکن کوششیں جاری رکھے گا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے داماد جارڈ کوشنر کی زیرنگرانی امن مساعی کو سعودی عرب کی بھرپور حمایت حاصل ہے۔ سعودی عرب تمام فریقین کے لیے امن کی بات کرتا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ میں فطری طورپر امن کی بات کرتا ہوں۔ ہمیں کشیدگی پیدا کرنے کی بات نہیں کرنا چاہیے۔ میں فلسطینیوں کے حقوق اور مفادات پر توجہ مرکوز کرنے کے ساتھ سب کے مفاد کی بات کرتا ہوں۔

اپنے اس انٹرویو میں سعودی ولی عہد نے یمن میں جاری جنگ، ایران کے ساتھ پائی جانے والی کشیدگی اور دیگر اہم امور پربھی تبادلہ خیال کیا۔ ان کا تفصیلی انٹرویو ٹرمپ سے ملاقات سے دو دن قبل 18 مارچ کو نشر کیاجائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں