.

فلسطینی وزیراعظم پر حملے کے ملزم سمیت دو افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں وزیراعظم کے قافلے پر حملے میں ملوث مشتبہ ملزمان اور سیکیورٹی اہلکاروں کے درمیان کارروائی میں ایک پولیس اہلکار اور مبینہ حملہ آور ہلاک ہو گئے۔

العربیہ کے مطابق غزہ کی پٹی میں جمعرات کو علی الصباح وسطی غزہ میں النصیرات کے مقام پر وزیراعظم رامی الحمد اللہ کے قافلے پر حملے کے مشتبہ ملزمان کے خلاف آپریشن شروع کیا۔ اس دوران ملزمان نے سیکیورٹی اہلکاروں پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں کم سے کم دو اہلکار جاں بحق اور متعدد زخمی ہو گئے۔

فلسطینی میڈیکل ذرائع اور محکمہ صحت کے مطابق جاں بحق ہونے والے اہلکاروں میں زیاد الحواجر اور حماد ابو سویرح شامل ہیں۔

غزہ وزارت داخلہ کے حکام کا کہنا ہے کہ تخریب کاروں کے ساتھ جھڑپ جاری ہے۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ النصیرات میں مشتبہ ملزمان اور سیکیورٹی حکام کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ جاری ہے۔

خیال رہے کہ 10 روز قبل فلسطینی وزیراعظم رامی الحمد اللہ کے قافلے پر بم دھماکہ کیا گیا تھا جس میں کم سے کم سات افراد زخمی ہو گئے تھے تاہم اس حملے میں وزیراعظم اور انٹیلی جنس چیف ماجد فرج محفوظ رہے تھے۔

گذشتہ روز حماس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم کے قافلے پر حملے میں ملوث ملزمان کے قریب پہنچ چکے ہیں۔ جلد ہی انہیں گرفتار کرلیا جائے گا۔

فلسطینی وزارت داخلہ کے ترجمان نے بتایا کہ وزیراعظم پر حملے میں ملوث ملزم کی شناخت انس عبدالمالک عبدالقادر ابو خوصہ کے نام سے کی گئی ہے. پولیس اور سیکیورٹی ادارے اس کا تعاقب کر رہے ہیں۔