اسلام معتدل ہے ، بعض عناصر ہائی جیک کی کوشش کر رہے ہیں : سعودی ولی عہد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا کہنا ہے کہ ان کے نزدیک اسلام عقل و شعور کا مذہب ہے۔ اسلام معتدل اور آسان ہے جب کہ ایسے لوگ ہیں جو اسے ہائی جیک کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ سعودی ولی عہد نے یہ بات واشنگٹن سے روانہ ہونے سے قبل امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کے ایڈیٹروں کے ساتھ ایک گھنٹے تک جاری رہنے والی ملاقات میں کہی۔

بن سلمان کے مطابق انہوں نے مملکت کے اندر اصلاحی اقدامات کے لیے پوری طاقت سے کام کیا۔ ان میں سعودی خواتین کے لیے گاڑی چلانے کی اجازت سمیت ان کو بہت سے حقوق کا پیش کرنا شامل ہے۔ سعودی ولی عہد کا کہنا تھا کہ انہیں قدامت پرستوں کو اس بات پر قائل کرنے کے لیے بہت محنت کرنا پڑی کہ اس نوعیت کی پابندیاں اسلامی نظریات کا حصّہ نہیں ہے۔

منگل کے روز سرکاری دورے پر امریکا آمد سے قبل ""CBS چینل کے پروگرام 60 Minutes میں گفتگو کرتے ہوئے بن سلمان نے کہا تھا کہ "1979ء کے بعد ہم شدت پسندی کا شکار ہو گئے بالخصوص میری عمر کی نسل اس کا نشانہ بنی"۔ انہوں نے اسکولوں اور تعلیم میں شدت پسندی کے سرائیت کر جانے پر بھی روشنی ڈالی۔ سعودی ولی عہد نے زور دے کر کہا کہ وہ شدت پسند افکار اور نظریات کو تعلیمی سیکٹر تک ہر گز نہں پہنچنے دیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں