.

قطری جتنی بھی کوشش کرلیں مگر بحران کا حل ریاض میں ہے : سعودی شاہی مشیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں شاہی دیوان کے مشیر سعود القحطانی نے جمعے کی شب اپنی سلسلہ وار ٹوئیٹس میں قطر کے سابق وزیراعظم اور وزیر خارجہ حمد بن جاسم آل ثانی کی اُن ٹوئیٹس کا جواب دیا ہے جس میں بن جاسم نے خلیج تعاون کونسل اور ریاض کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

القحطانی نے باور کرایا کہ "آپ لوگ جو بھی کوشش کرلیں مگر بحران کا حل ریاض کے ہی پاس ہے۔ آپ جانتے ہیں کہ دنیا میں کوئی نہیں جو ریاض پر کوئی چیز مسلط کر سکے۔ یہ وہ ہی ریاض ہے جس کے خلاف آپ نے قذافی کے ساتھ مل کر سازش کی تھی۔ یہ وہ ہی ریاض ہے جہاں آپ نے 2013ء اور 2014ء میں سب کے ساتھ دو معاہدوں کی پاسداری کا عہد کیا تھا اور پھر اپنے تمام عہد اور حلف توڑ دیے"۔

سعودی مشیر کا مزید کہنا تھا کہ "یہ سلمان بن عبدالعزیز کا ریاض ہے جنہوں نے آپ کو ایک سے زیادہ مواقع عطا کیے تا کہ آپ اپنے برتاؤ کا جائزہ لیں اور اپنے لا اُبالی پن کو ترک کر دیں"۔

حمد بن جاسم کی خلیج تعاون کونسل پر تنقید کا جواب دیتے ہوئے القحطانی نے کہا کہ "حمد بن جاسم آپ تعاون کونسل کے بارے میں بات کر رہے ہیں؟ کیا آپ کونسل کے تمام ممالک کے خلاف اپنی سازش کو بھول گئے ہیں جس کو آپ نے بہارِ عرب کا نام دیا تھا ؟ کونسل میں آپ کی عسکری، سیاسی اور اقتصادی حیثیت کیا ہے ؟ آپ کی سازشوں اور مداخلتوں کو ناکام بنانے میں ہمارے سکیورٹی اہل کاروں کے تھوڑے بہت مصروف ہونے کے سوا ہمارا کیا بدلے گا ؟