.

حسنی مبارک انٹرنیٹ سروس معطل کرنے کے کیس میں بری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے سابق صدر حسنی مبارک جنوری 2011ء کے انقلاب کے دوران مصر میں مواصلاتی نظام کو مفلوج کرنے اور ملک بھر میں انٹرنیٹ سروسز معطل کرنے کے کیس میں بری کردیا ہے۔

خبر رساں اداروں کے مطابق ہفتے کے روز مصر کی ایک عدالت نے سابق صدر حسنی مبارک ، سابق وزیراعظم احمد نظیف اور سابق وزیر داخلہ حبیب العادلی کو انقلاب کےدوران انٹرنیٹ سروسز معطل کرنے کے کیس میں بری کردیا۔

خیال رہے کہ سابق صدر حسنی مبارک اور ان کی حکومت پر جنوری دو ہزار گیارہ کے دوران ملک میں برپا ہونے والی بغاوت کے دوران مواصلاتی نظام منجمد کرنے کے الزام میں 5 کروڑ 40 لاکھ مصری پاؤنڈ یعنی 31 ملین امریکی ڈالر کے مساوی رقم کا جرمانہ کیا گیا تھا۔

مصری عدالت کی طرف سے یہ فیصلہ ایک ایسے وقت میں سامنے آیا جب ملک میں کل سے صدارتی انتخابات ہو رہے ہیں۔ توقع ہے کہ صدر عبدالفتاح السیسی دوسری مدت کے لیے مصر کے صدرمنتخب ہوجائیں گے۔