.

سعودی عرب میں یورینیم کے 5 فی صد محفوظ ذخائر موجود ہیں: ولی عہد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے پاس پوری دنیا کے یورینیم کے پانچ فی صد ذخائر موجود ہیں۔ ہم نے یورینیم کو استعمال نہیں کیا تو یہ ایسے ہی ہے جیسے کہ تیل کے ذخائر کو استعمال نہیں کیا گیا۔

سعودی ولی عہد کا کہنا تھا کہ ان کے ملک کے پاس یورینیم افزودگی اور اس کی تیاری کی صلاحیت بھی موجود ہے۔ ہم بیرون ملک سے یورینیم منگوانے کے بجائے توانائی تنصیبات کے لیے اپنے محفوظ ذخائرکو استعمال کرسکتے ہیں۔

اخبار ’واشنگٹن پوسٹ‘ کو دیے گئے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ انہوں نے امریکا پر زور دیا ہے کہ وہ ایسے قوانین اور قاعدے وضع کرے جن کی مدد سے یہ یقین کیاجائے کہ کوئی ملک یورینیم کوغلط مقاصد کےلیے استعمال نہیں کرے گا۔

سعودی اخبار’الاقتصادیہ‘ کی رپورٹ کے مطابق مملکت بجلی کے لیے توانائی کے پروگرام پر کام کرنے کے لیے جوہری تنصیبات اور نئے پلانٹ لگانے کے لیے کام کررہی ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاروں کو سعودیہ میں اس شعبے میں سرمایہ کاری پر متوجہ کیا جاسکے۔

اسی حوالے سے سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا کہ ان کے دورہ امریکا کا ایک اہم مقصد امریکی سرمایہ کاروں کو سعودی عرب میں سرمایہ کاری کی ترغیب دینا ہے۔