جازان میں بیٹی کےہاتھوں باپ کے قتل کی خبر من گھڑت قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے سرحدی شہر جازان میں پولیس نے سوشل میڈیا پر ایک پچاس سالہ شہری کی اس کی بیٹی کے ہاتھوں قتل کی خبر کو من گھڑت اور بے بنیاد قرار دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جازان کےپولیس ترجمان کیپٹن نایف بن عبدالرحمان الحکمی نے ایک بیان میں واضح کیا کہ اخبارت اور سوشل میڈیا پر ایک شہری کی اس کی بیٹی کے ہاتھوں قتل کی خبریں بے بنیاد ہیں۔ پولیس اس حوالے سے چھان بین کررہی ہے مگر ابھی تک اس خبر کی کسی طرف سے کوئی اطلاع یا رپورٹ درج نہیں کرائی گی۔

خیال رہے کہ سعودی عرب کے علاقے جازن میں الدرب کے مقام پر یہ خبر سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی تھی کہ ایک بیس سالہ لڑکی نے اپنے پچاس سالہ والد کو قتل کردیا۔

سوشل میڈیا کے مطابق ایک لڑکی نے اپنے باپ کے ساتھ کسی بات پر تنازع پیاد ہونے کے بعد اسے سات گولیاں ماریں۔ مقتول کے اقارب نے اس کی لاش اٹھائی جو خون میں لت پت تھی۔ پولیس نے واقعے کے بعد علاقے کو گھیرے میں لے کر اس کی حقیقت معلوم کرنے کی کوشش کی مگر ایک لڑکی کو بھی گرفتار کیا ہے مگر ابھی تک اس خبر کے درست ہونے کا کوئی ثبوت نہیں ملا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں