.

مصر: شمالی سیناء میں فوج کی چھاپا مار کارروائی میں 6 جنگجو ، 2 فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے شورش زدہ علاقے سیناء میں داعش کے مشتبہ دہشت گردوں کے خلاف جاری کارروائی کے دوران میں چھے جنگجو اور دو فوجی ہلاک ہوگئے ہیں ۔

مصری فوج کے ترجمان تامر الرفاعی نے اتوار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ فوج نے جزیرہ نما سیناء کے شمال میں دہشت گردوں کے ایک بہت ہی خطرناک سیل کے ٹھکانے پر چھاپا مار کارروائی کی تھی۔اس دوران میں چھے جہادی فائرنگ کے تبادلے میں ہلاک ہوگئے ہیں۔انھوں نے اس کارروائی میں ایک افسر اور ایک فوجی کی ہلاکت کی بھی تصدیق کی ہے اور دو فوجی زخمی ہوئے ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ گذشتہ ایک ہفتے کے دوران میں فوج نے پانچ سو سے زیادہ ’’ مطلوب مجرموں ‘‘ کو گرفتار کر لیا ہے اور مختلف قومیتوں کے حامل 169 افراد کو لیبیا کے ساتھ واقع مغربی سرحد سے ملک میں دراندازی سے روک دیا گیا ہے۔

مصری فورسز صدر عبدالفتاح السیسی کے حکم پر فروری سے اسرائیل اور غزہ کی پٹی کی سرحد کے ساتھ واقع شورش زدہ علاقے شمالی سیناء میں انتہا پسند جنگجوؤں کے خلاف نئی کارروائی کررہی ہیں۔ انھوں نے نومبر 2017ء میں سیناء ہی میں ایک مسجد میں تباہ کن حملے میں 300 سے زیادہ نمازیوں کے جاں بحق ہونے کے بعد سکیورٹی فورسز کو تین ماہ میں جنگجوؤں کو شکست دینے کا حکم دیا تھا۔

مصری فوج کے بہ قول سیناء میں جنگجوؤں کے خلاف جاری آپریشن میں آرمی ، بحریہ اور فضائیہ کے درمیان بے مثال نظم اور رابطہ کاری ہے ۔ تاہم تجزیہ کاروں اور سفارت کاروں کا کہنا ہے کہ انھوں نے شمالی سیناء کو جنگجوؤں سے پاک کرنے کے لیے نئے جنگی حربوں کے کارآمد نتائج برآمد ہوتے نہیں دیکھے ہیں۔

مصری فوج جزیرہ نما سیناء کے علاوہ وسطی نیل ڈیلٹا اور لیبیا کی سرحد کے ساتھ واقع مغربی صحرا میں بھی ’’ آپریشن سیناء 2018ء ‘‘ کے نام سے جنگجوؤں کے خلاف کارروائی کررہی ہے اور اس کے دوران میں اس نے اب تک داعش سے وابستہ تین سو جنگجوؤں کی ہلاکت اور سیکڑوں کو گرفتار کرنے کے دعوے کیے ہیں۔اس کارروائی میں 22 مصری فوجی ہلاک ہوگئے ہیں ۔

عبدالفتاح السیسی اسی ہفتے 96.9 فی صد ووٹ لے کر مصر کے دوبارہ صدر منتخب ہوگئے ہیں ۔ان انتخابات میں ان کے مدمقابل صرف ایک امیدوار تھا۔ملک کی قومی الیکشن اتھارٹی سوموار کو صدارتی انتخاب کے باضابطہ سرکاری نتائج کا ا علان کرنے والی ہے۔